کشمیر میں گرمی کی لہر ، پارہ31.6 جموں میں 41.2 ڈگری ریکارڈ

 عظمیٰ نیوز سروس

 

سرینگر //جموں کے کچھ حصوں سمیت وادی کشمیر میں گرمی کی لہر تیز ہونے کے ساتھ ابل رہی ہے ۔ ماہر موسمیات نے اگلے ایک ہفتے تک مزید گرم اور خشک موسم کی پیش گوئی کی ہے۔ گرمائی دارالحکومت سرینگر میں موسم کا گرم ترین دن 31.6 ڈگری سیلسیس ریکارڈ کیا گیا۔بدھ کو گلمرگ اور پہلگام کو چھوڑ وادی کے سبھی اہم مقامات پر درجہ حرارت 30ڈگری سے اوپر رہا۔قاضی گنڈ میں پارہ 31.6 رہا ۔کوکرناگ میں30.2 اورکپواڑہ میں 30.2 رہا۔جموں ڈویژن میں کئی مقامات پر درجہ حرارت 30 ڈگری سیلسیس کے نشان کو بھی عبور کر گیا، جس میں بانہال، بٹوٹ، کٹرہ اور بھدرواہ شامل ہیں جبکہ جموں میں پارہ 41.2 ڈگری سیلسیس پر رہا۔

 

محکمہ موسمیات نے آنے والے دنوں میں شدید گرمی کی لہر کی پیش گوئی کی ہے جس میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت میں مزید اضافے کا امکان ہے اور اگلے ایک دو روز میں پارہ 44 ڈگری سینٹی گریڈ سے اوپر جا سکتا ہے۔سکاسٹ جموں کے سینئر سائنسدان ڈاکٹر مہندر سنگھ نے کہا کہ فی الحال مہینے کے آخرتک دن کے درجہ حرارت تک کوئی بڑی تبدیلی متوقع نہیں ہے۔شاید 27-28 مئی تک 41 ڈگری سے 42 ڈگری اور آنے والے دنوں میں 44 ڈگری کو عبور کرنے کی توقع ہے۔انہوں نے کہا کہ 22 سے 28 مئی تک عام طور پر خشک موسم کے ساتھ الگ تھلگ مقامات پر گرج چمک کے ساتھ بارش کے امکان کو رد نہیں کیا جا سکتا جبکہ مجموعی طور پر 28 مئی تک موسم کی کوئی خاص سرگرمی نہیں ہوگی۔انہوں نے کہا کہ جموں ڈویژن کے میدانی علاقوں میں گرمی کی لہر جموں کے پہاڑی اضلاع اور کشمیر کے میدانی علاقوں میں گرم اور خشک موسم کے ساتھ اگلے پانچ دنوں کے دوران جاری رہنے کا امکان ہے۔