کرناہ کپوارہ شاہراہ پر ٹریفک کھول دیا جائے

سرینگر // برف باری کے بعد پچھلے ایک ماہ سے سرینگر میںدرماندہ کرناہ کے مسافروں نے ایک بار پھر پریس کالونی میں احتجاجی کیا اور سرکار سے مطالبہ کیا کہ کرناہ کپوارہ شاہراہ کو بحال کر کے لوگوں کی آواجاہی کو ممکن بنایا جائے۔احتجاجیوں نے بیکن اور ریاستی انتظامیہ کے خلاف بھی نعرہ بازی کی ۔درماندہ کرناہ کے مسافروں نے پریس کالونی میں آکر میڈیا کو بتایا کہ وہ پچھلے ایک ماہ سے وادی کے متعدد علاقوں میں درماندہ ہیں لیکن سرکار نہ ہی انہیں اپنی اپنی منزلوں تک پہنچانے کیلئے ہیلی کاپٹر سروس فراہم کر رہی ہے اور نہ ہی کرناہ کپوارہ شاہراہ کو بحال کیا جا رہا ہے ۔احتجاج کرتے ہوئے لوگوں نے بتایا کہ اُن کے جیب خالی ہو چکے ہیں جبکہ اُن کے پاس رہنے کیلئے بھی جگہ نہیں ہے ایسے لوگوں کا کہنا ہے کہ کئی ایک لوگ وادی کی مساجدوں میں رہ کر اپنی راتیں گزارتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس سے قبل بھی سردیوں میں بھاری برف باری ہوتی تھی لیکن اُس وقت اتنے دن تک شاہراہ کو بند نہیں رکھا جاتا تھا لیکن اس بارشاہراہ کو ایک ماہ سے نہیں کھولا جا رہا ہے ۔احتجاج کر رہے لوگوں نے ریاستی گورنر اور انتظامیہ سے مانگ کی ہے کہ شاہراہ کو فلفور بحال کر کے لوگوں کی آواجاہی کو یقینی بنایا جائے ۔