کانگریس نے افسپا ہٹا نے میں ساتھ نہیں دیا

کپوارہ// نینشنل کانفرنس نائب صدر عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ اگر کانگریس نے ان کا ساتھ دیا ہوتا تو ریاست جموں و کشمیر میں افسپا کو ہٹایا ہوتا ۔ عمر عبد اللہ نے کپوارہ کے ٹورسٹ رسپشن سنٹر میں عوامی اجتماع سے خطاب کے دوران کہا کہ آج کانگریس پارٹی (افسپا)ہٹانے کی باتیں کرتی ہیں لیکن انہو ں نے اپنے دور اقتدار میں ساتھ نہیں دیا۔جب یہاں کانگریس اور نیشنل کا نفرنس کی ملی جلی سرکار تھی تو اسے ختم کیا گیاہوتا ۔عمر نے پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کی خصوصی پوزیشن کو ان کی سرکار نے زک پہنچایا اور یہا ں این آئی اے کو لاکر حریت چیئر مین میر واعظ عمر فاروق کے خلاف پہلا کیس ان کی حکومت میں درج کیا گیا ۔عمر عبداللہ نے کہا کہ محبوبہ مفتی کے دور میںپیلٹ گن چلائے گئے ،ہزارو ں نوجوان اپنی آنکھو ں کی بینائی سے محروم ہوگئے، تب ان کا ضمیر کہا ں تھا ، تب ان کے آنسو اور ہمدردیا ں کہا ں تھی ؟۔عمر نے کہا کہ 2016میں جب یہا ں حالات خراب ہوئے تب محبوبہ مفتی نے استعفیٰ کیو ں نہیں دیا اور آج یہ کہہ کر نہیں تھکتی کہ وہ اس ریاست کے حقیقی نمائندہ ہیں ،جب حکومت گئی تو اب انہیں ساری برائیا ں نظر آنے لگی ۔عمر نے کہا کہ پیپلز کانفرنس چیئر مین ہر روز ان کے خلاف ناشائستہ الفاظ کا استعمال کرتے ہیںلیکن میرے ان کے ساتھ سیاسی اختلافات ہیں مگر میں نے ان کی ذات پر کبھی حملہ نہیں کیا ۔ بی جے پی کو ریاست میں کس نے لایا، یہ کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں ہے ۔انہو ں نے کہا کہ جو لوگ کہتے ہیں مودی ان کا بڑا بھائی ہے ان کو سمجھنا چایئے کہ انہو ں نے ہی ریاست کی خصوصی پوزیشن کو زک پہنچایا اوراپنے دور اقتدار میں دفعہ370اور35Aکو بچانے کے لئے ایک لفظ تک نہیں کہا ۔عمر نے کہا کہ جب ان کی پارٹی نے سپریم کورٹ میںمقدمہ درج کیا تب محبوبہ مفتی سرکار ،جس کا حصہ سجاد لون بھی تھے ،کو یہ معاملہ یاد آیا۔عمر نے مزید کہا کہ سابق مخلوط سرکار نے جی ایس ٹی لاگو کر کے ریاست کے غریبو ں کے پیٹ پر خنجر گھونپ دیا جبکہ فوڈ سیفٹی ایکٹ نافذ کر کے لوگو ں کا راشن ہی چھین لیا ۔