ڈینٹل کالج میں طلبہ و طالبات کا احتجاج

سرینگر //سرینگر کے ڈینٹل کالج میں زیر تعلیم بی ڈی ایس اور پی جی ڈینٹل سرجری کے طلبہ و طالبات نے ڈینٹل سرجنوں کو سرکاری اسپتالوں میں نوکری فراہم کرنے کے حق میں مظاہرہ کیا ۔ڈینٹل کالج سرینگر کے احاطے میں منعقد کئے گئے مظاہرے کے دوران بات کرتے ہوئے ڈینٹل سرجنوں کی ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر ہاشم نے بتایا ’’عالمی ادارئہ صحت کے قوائد و ضوابط کے مطابق 10ہزار کی آبادی کیلئے ایک ڈینٹل سرجن کی ضرورت ہوتی ہے اور اس حساب سے 15ہزار ڈینٹل سرجنوں کی ضرورت ہے۔ انہوںنے بتایا ’’سرکار ڈینٹل سرجنوں کو 5لاکھ روپے کا قرضہ دیکر پرائیویٹ کلنک کھولنے کا مشورہ دے رہی ہے لیکن اپنے مستقبل کا ہمیں خود ہی فیصلہ کرنا ہوگا‘‘۔ ایسوسی ایشن کے صدر نے بتایا ’’ڈینٹل سرجنوں کو سرکاری قرضوں کی ضرورت نہیں ہے بلکہ ہمیں سرکاری نوکریوں کی ضرورت ہے۔ڈاکٹر ارم نامی ایک اور ڈاکٹرنے بتایا کہ سال 2008سے ڈینٹل سرجنوں کی بھرتی نہیں ہوئی ہے اور اسلئے ہم سرکار سے ڈینٹل سرجنوں کی خالی پڑی اسامیوں کو پر کرنے کی اپیل کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈینٹل سرجنوں کو قرضہ دیکر پرائیویٹ کلنک کھولنے کا سرکاری مشورہ کسی بھی صورت میں منظور نہیں ہے۔ انہوں نے مزید بتایا ’’ پی ایس سی کے ذریعے ڈینٹل سرجنوں کی بھرتی ہمارا حق ہے اور ہم اپنے حق کیلئے کسی بھی صورت میں لڑتے رہیں گے‘‘۔