چین کا پل کی تعمیر کے بعد ٹاور نصب کرنیکا معاملہ

نیوز ڈیسک
نئی دہلی //لداخ میں پینگونگ جھیل پر پل کی تعمیر کے بعد تین موبائل ٹاور نصب کرنے کے معاملے کو بھارت نے تشویشناک قرار دیا ہے۔ مرکزی وزرات خارجہ ترجمان نے واضح کر دیا کہ بھارت نے ہمیشہ چین کے ساتھ سرحدی معاملات پر پُر امن طریقہ سے مذاکرات کے ذریعے حل کی خواہش کی ہے تاہم سرحدی حدود کو تبدیل کرنے کی اجازت نہیںدی جا سکتی ۔ لداخ میں پینگونگ جھیل پر پل مکمل کرنے کے بعد، چین نے تین موبائل ٹاورچین کے گرم چشمہ کے قریب ہندوستانی علاقے کے بالکل قریب نصب کئے ہیں۔اس معاملے کی جانب لداخ کے ایک کونسلر نے  توجہ دلاتے ہوئے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے ہاں 4G کی سہولت بھی نہیں ہے۔کونسلر نے بتایا کہ ٹاورز کو ہمارے علاقے کا مشاہدہ کرنے کیلئے استعمال کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ چین سرحد کے اطراف میں ’’تیزی سے بنیادی ڈھانچے کی ترقی‘‘ کر رہا ہے۔ مرکزی وزرات خارجہ ترجمان ارندم باگچی نے کہا کہ چین کی ایسی کوششوںکو قعطی برداشت نہیںکیا جا سکتا اور چین پر واضح کر دیا ہے کہ وہ اس طرح کی کارروائیوں سے باز رہے۔