چندر کوٹ میں پی ڈی سی ڈیلی ویجروں کا احتجاج

رام بن//جموں و کشمیر پاور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے 900 میگا واٹ بگلیہار ہائیڈرو الیکٹرک پروجیکٹ چندر کوٹ میں کام کرنے والے یومیہ اجرت والوں نے جمعہ کو چیف انجینئر بی ایچ ای پی چندر کوٹ کے دفتر کے احاطے میں ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔وہ تنخواہوں کے اجراء کا مطالبہ کر رہے تھے جو ان کے مطابق گزشتہ تین ماہ سے زیر التوا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ یہاں یہ ایک نظیر بن چکی ہے کہ ہر بار جے کے پی ڈی سی کی انتظامیہ ہمیں تنخواہوں کی عدم فراہمی پر احتجاج کرنے پر مجبور کرتی ہے۔انہوں نے اپنے مطالبات کے حق میں اور جموں و کشمیر پاور ڈیولپمنٹ کارپوریشن کی انتظامیہ کے خلاف نعرے لگائیصدر آل ڈیلی ویجرس اینڈ نیڈ بیسڈ ورکرز یونین بی ایچ ای پی چندر کوٹ، عبادت علی نے دھمکی دی کہ اگر کارپوریشن کی انتظامیہ کی طرف سے ہماری زیر التوا اجرتیں جاری نہیں کی گئیں تو چندر کوٹ پراجیکٹ سے بجلی کی پیداوار کو روکنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں بچا ہے۔انہوں نے کہا کہ تنخواہوں کی عدم دستیابی کے باعث مزدوروں کے خاندان فاقہ کشی کے دہانے پر ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس منصوبے سے یومیہ 7 کروڑ کی آمدنی ہو رہی ہے اس کے باوجود جے کے پی ڈی سی اس منصوبے میں کام کرنے والے یومیہ اجرت والوں کی تنخواہیں ادا کرنے میں ناکام رہی۔ان کا کہنا تھا کہ ہمارے کچھ ساتھیوں کی تنخواہیں پچھلے دو سال سے التوا میں ہیں۔انہوں نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا، کمشنر سیکرٹری پاور نیتیشور کمار سے اپنی تنخواہیں جاری کرنے کے لیے مداخلت کی درخواست کی ہے۔چیف انجینئر (برقی) بی ایچ ای پی چندر کوٹ، وی کے سنگرال نے کہا کہ انہوں نے یہ معاملہ کارپوریشن کے اعلیٰ حکام کے نوٹس میں لایا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اعلیٰ حکام کی طرف سے یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ یومیہ اجرت پر کام کرنے والوں کی تنخواہیں جلد جاری کر دی جائیں گی۔انہوں نے بی ایچ ای پی چندر کوٹ میں کام کرنے والے یومیہ اجرت پر کام کرنے والوں سے اپیل کی کہ وہ اپنی ڈیوٹی دوبارہ شروع کریں کیونکہ یہ پروجیکٹ باوقار ہے۔