پیلٹ لگنے سے طالب علم کی آنکھ کی پتلی کو نقصان

     سرینگر //کٹھوعہ واقعہ کے خلاف احتجاج کرنے والے نوجوانوں کو احتجاج کی قیمت آنکھوں کی بینائی سے چکانی پڑرہی ہے اورپچھلے دو روز میں 5نوجوان آنکھوں میں چھرے لگنے کی وجہ سے زخمی ہوئے ، جبکہ ایک نوجوان کی آنکھ کی پتلی کو نقصان پہنچا ہے۔ جن  6نوجوانوں کو  صدر اسپتال میں منتقل کیا گیا جن میں ایک نوجوان شل لگنے کی وجہ سے زخمی ہوا جبکہ 5نوجوانوں کے آنکھوں میں پیلٹ لگے ہیں۔ چھروں کی وجہ سے نہ صرف طالب علم زخمی ہوئے ہیں بلکہ دوعام نوجوان بھی شامل ہیں۔ پچھلے دو دنوں میں آنکھوں پر چھرے لگنے سے زخمی ہونے والے نوجوانوں میں  22سالہ عمر احمد شاہ ساکن شوپیاں، 18سالہ طالب علم شاہد احمد، جنید احمد ،21سالہ اشفاق احمد ساکن پلوامہ کے نام  قابل ذکر ہیں۔ڈگری کالج پلوامہ کے طالب علم شاہد احمد ساکن چاڈورہ کی دائیں آنکھ میں پیلٹ لگا ہے‘‘ ۔ 9ویں جماعت کے طالب علم عبید منظور ساکن سیلو شوپیاں کی دائیں آنکھ میں پیلٹ لگے ہیں ۔ ڈاکٹروں نے بتایا کہ اشفاق احمد نامی نوجوان کی آنکھوں کی پتلی کو نقصان پہنچا ہے اور جراحیوں کے بعد ہی اصل صورتحال واضح ہوجائے گی ۔ ڈاکٹروں نے بتایا کہ بدھ اور جمعرات کو لائے گئے 5نوجوانوں میں 4کی آنکھوں کو زیادہ گہرے زخم نہیںلگے ہیں اور ابتدائی جراحیوں کے بعد انہیں گھر روانہ کردیا جائے گا۔