پہاڑی علاقوں میں برفباری، میدانوں میں ہلکی بارش

سرینگر+بانہال //پیر پنچال کے آر پار میدانی علاقوں میں بارشیں اور بالائی علاقوں میں کہیں ہلکی تو کہیں اچھی خاصی برف باری ہوئی ہے۔ محکمہ موسمیات نے امکان ظاہر کیا ہے کہ آج یعنی پیر کی دوپہر سے موسم میں تبدیلی آئے گی ۔ اس بیچ ڈویژنل انتظامیہ نے بالائی علاقوں میں برفانی تودے گرنے کی وارننگ جاری کرتے ہوئے لوگوں کو احتیاط برتنے کی تلقین کی ہے ۔ وادی کے بالائی علاقوں گلمرگ، گریز،سونہ مرگ اور پہلگام، کپوارہ کے بالائی علاقوں کیرن ،مژھل اور کرناہ کے پہاڑی علاقوں میں ہلکی سے درمیانی درجہ کی برف باری ہوئی ہے۔ تازہ  برف باری کے سبب ریاست بھر میں رات کے درجہ حرارت میں بہتری جبکہ دن کے درجہ حرارت میں کمی ریکارڈ کی گئی ۔ تازہ برف باری کے پیش نظر 434 کلو میٹر طویل سری نگر لیہہ شاہراہ اور تاریخی مغل روڑ پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل کردی گئی ہے جبکہ گریز بانڈی پورہ شاہراہ کے علاوہ کپوارہ مژھل کیرن اور کرناہ سڑکیں بھی گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے احتیاطی طور بند کر دی گئی ہیں۔ ان علاقوں کی پہاڑیوں پر برف کی تازہ پرت بچھ گئی ہے ۔کنگن سے غلام نبی رینہ کے مطابق سونہ مرگ ،زوجیلا اور گگن گیر میں تازہ برفباری ہوئی۔ جس کے نتیجے میں شاہراہ کے دونو ں اطراف میں سینکڑوں گاڑیاں درماندہ ہوگئی ہیں ۔کپوارہ سے اشرف چراغ کے مطابق کرناہ کپوارہ شاہراہ پر بھاری برف باری کے نتیجے میں 26مسافرجو برف باری کی وجہ سے درماندہ ہو کر رہ گئے تھے ،کو واپس لایا گیا۔سوموار کی صبح جو 2سومو گاڑیاں کرناہ سے کپوارہ کی طرف روانہ ہوئی تھیں، وہ بھی سادھنا  ٹاپ پر درماندہ رہیں اور گاڑیوں میں سوار 5خواتین 4بچوں اور 3مردوں کو فوج اور پولیس کی مدد سے برف سے نکال لیا گیا۔کرناہ کی نستہ ژھن گلی (سادھناٹاپ)پر8،فرکیان گلی پر 9اور مژھل کی زڈ گلی پر 7انچ برف ریکارڈ کی گئی ۔بھاری برف باری کی وجہ سے میلیال کیرن ،چوکی بل کرناہ ،سرکلی مژھل اور چوکی بل بڈنمل سڑکوں کو گاڑیو ں کی آمد ورفت کے لئے بند کر دیا گیا  ہے۔گلمرگ میں قریب دو انچ تازہ برف یکارڈ کی گئی اور وہاں سوموار کو پورا دن وقفے وقفے سے برف باری کا سلسلہ جاری تھا ۔سونہ مرگ میں بھی تازہ 2سے 3انچ برف سوموار کی شام تک جمع ہو گئی تھی ۔کپوارہ کے بالائی علاقوں میں 5 انچ سے 10انچ برف جمع ہے ۔پہلگام کے بالائی حصوں بشمول چندن واڑی، شیش ناگ، مہاگنس، پسو ٹاپ اور پنج ترنی میں ہلکی سے درمیانہ درجہ کی برف باری ہوئی ہے۔ سرینگر میں سوموارکو ہلکی بوندا باندی ہوئی ۔ادھر ڈویژنل انتظامیہ نے برفانی تودے گرنے کی وارننگ جاری کرتے ہوئے بارہمولہ ، کپوارہ ، بانڈی پورہ اور شمالی کشمیر کے متعدد بالائی علاقوں میں رہائش لوگوں سے کہا ہے کہ وہ خراب موسم میں نقل حمل میں مکمل طور پر احتیات برتیں۔ محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر مختار احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ مغری ہوائوں کا رخ وادی کی طرف تھا جس کی وجہ سے 9اور10کی درمیانی رات کو بالائی علاقوں میں برف باری اور میدانی علاقوں میں بارشیں ہوئی تاہم انہوں نے کہا کہ آج دوپہر سے موسم میں تبدیلی آئی گئی ۔
بانہال
 جموں سرینگر شاہراہ پر واقع جواہر ٹنل کے دونوں طرف تازہ برفباری کے بعد شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت پیر کی دوپہر بعد بند کر دی گئی  اور ٹنل کے دونوں طرف اور دیگر مقامات پر ٹریفک کو آگے بڑھنے سے روک دیا گیا ۔پیرکی صبح دس بجے بعد پہاڑوں پر ہلکی برفباری اور میدانی علاقوں بارشوں کا سلسلہ شروع ہوا جو پیر کی شام تک جاری تھا۔ بانہال اور رام بن کے مہو منگت ، ٹنل ٹاپ ، گول ، سناسر اور پتنی ٹاپ میں بھی تازہ برفباری ہوئی ۔ مہو منگت میں ایک فٹ جبکہ ٹنل کے دونوں طرف تین سے پانچ انچ برف ریکارڈ کی گئی ۔ڈی ایس پی ٹریفک بانہال سیکٹر پردیپ کمارنے کشمیر عظمی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پیرکی دوپہر بعد جواہر ٹنل کے آر پار برفباری کے بعد پھسلن پیدا ہونے کی وجہ سے گاڑیوں کی آمدورفت دوپہر دو بجے بعد احتیاطی طور بند کی گئی ہے۔