پرائمری سکو ل بانیاوالی کالابن2003 سے زیر تعمیر

مینڈھر//تعلیمی زون مینڈھر کے گورنمنٹ پرائمری سکو ل بانیاوالی کالابن 2003-04سے زیر تعمیر ہے جس کی وجہ سے سکول میں زیر تعلیم بچوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا رہاہے ۔پرائمری سکو ل بانیاوالی کالابن میں اس وقت 30سے زائد بچے زیر تعلیم ہیں لیکن محکمہ ایجوکیشن و ضلع انتظامیہ پو نچھ کی عدم توجہی کی وجہ سے بچوں کا مستقبل تاریک ہو تا جارہا ہے ۔مقامی لوگوں کے مطابق مذکورہ سکو ل میں اس وقت پانچ کلاسوں کو تعلیم فراہم کرنے کیلئے 3ٹیچروں کو تعینات کیا گیا تھا لیکن کئی سال قبل بنی عمارت تو بنا فرش اور پلستر کے چھوڑ دیا گیا ہے اور بچوں کے مستقبل کو محکمہ تعلیم کے اعلی افیسران جان بوجھ کر ختم کر رہے ہیں۔لوگوں نے محکمہ تعلیم کے اعلی افیسران کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ محکمہ جان بوجھ کر ان کے بچوں کو تباہی کی طرف دھکیل رہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہمیشہ سرکاری سکولوں میں غریب طبقہ کے بچے تعلیم حاصل کر تے ہیں لیکن انتظامیہ ان سکولوں میں بہترین سہولیات فراہم کرنے کے صرف دعوے ہی کر تی ہے جبکہ زمینی سطح پر بنیادی سہولیات کا فقدان رہتا ہے ۔ایک مقامی شخص محمد نثار چوہدری نے بتایا کہ سکول کے اندر بچوں کیلئے کوئی بھی بنیادی سہولیات نہیں ہے نہ ہی بچوں کیلئے بیت الخلاء اور نہ ہی رسوئی ہے ، صرف ایک عمارت متعلقہ محکمہ نے بنائی ہوئی ہے جو کہ کھنڈرات نظر آ رہی ہے اور بچوں کو جان بوجھ کر تباہی کی طرف لے جا رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ2003-04میں بنائی گئی عمارت کو بغیر فرش پلستر کے چھوڑ دیا گیا۔مقامی لوگوں نے ریاستی انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ سکول کی تعمیر مکمل نہ کئے جانے کے سلسلہ میں تحقیقات کروائی جائے ۔ڈپٹی چیف ایجوکیشن آفیسر مینڈھر نے بتایا کہ مذکورہ عمارت کافی پرانی تعمیر کی گئی ہے جبکہ بچوں کو سہولیات فراہم نہ کئے جانے کے سلسلہ میں کارروائی عمل میں لائی جائے گی ۔