پاکستانی مقبوضہ کشمیر کا مسئلہ اقوام متحدہ میں اٹھائیں رینہ کا وزارت خارجہ کو مشورہ ،سرحد پار لوگوںکیلئے مدد کا ہاتھ بڑھایا

سمت بھارگو

راجوری//بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر رویندر رینہ نے وزیر خارجہ ایس جے شنکر سے پاکستانی مقبوضہ جموں و کشمیر میں ہونے والے مظاہروں سے متعلق معاملے میں مداخلت کرنے اور حکومت پاکستان کے ہاتھوں مظالم کا سامنا کرنے والے لوگوں کی جانوں کے تحفظ کے لیے اس معاملے کو اقوام متحدہ میں اٹھانے کی درخواست کی ہے۔رینہ نے جموں و کشمیر کے راجوری ضلع کے درہال میں بی جے پی کے ایک ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ PoJK میں صورتحال کافی تشویشناک ہے اور لوگوں کو حکومت کے ہاتھوں بڑے پیمانے پر مظالم کا سامنا ہے۔انکاکہناتھا”وہ اپنے بنیادی حقوق اور حکومت کی طرف سے زبردستی لگائے گئے بڑے پیمانے پر ٹیکسوں میں کمی کے سوا کچھ نہیں مانگ رہے ہیں‘‘۔رینہ نے مزید کہا کہ ان کے مسائل کو حل کرنے کے بجائے وہاں کی حکومت عوام کو کونے میں دھکیل رہی ہے۔انہوںنے کہا”ہمیں کھلی فائرنگ کے واقعات کے بارے میں معلوم ہوا ہے جس میں بہت سے لوگ اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں‘‘۔رینہ نے مزید کہا کہ سینکڑوں لوگ ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں اور پاکستانی مقبوضہ جموں و کشمیر کے تقریباً تمام علاقوں میں مکمل افراتفری اور بدامنی ہے۔ رینہ نے کہا”میں نے پہلے ہی حکومت ہند کے وزیر خارجہ سے اس معاملے پر بات چیت کی ہے تاکہ ان کی مداخلت حاصل کی جا سکے اور اس معاملے کو اقوام متحدہ کے سامنے اٹھانے کے ساتھ ساتھ پاکستانی مقبوضہ جموں و کشمیر میں لوگوں کے حقوق کے تحفظ کے ساتھ ساتھ ان علاقوں میں ہندوستانی شہری کو بچانے کی کوشش کی جاسکے‘‘۔انہوں نے اس مشکل وقت میں پاکستانی مقبوضہ جموں و کشمیر کے لوگوں کو راشن سمیت تمام بنیادی سہولیات کی بھی پیشکش کی۔