پائین شہر میں بندشیں

 سرینگر//شہری ہلاکتوں کے خلاف احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر پائین شہر میں سخت ترین بندشوں کے نتیجے میں تاریخی جامع مسجد سرینگر میں نماز جمعہ کی ادائیگی کی اجازت نہیں دی گئی۔اس دوران شہر خاص کو سیل کیا گیااور فورسز اور پولیس اہلکاروں کو کو کسی بھی ممکنہ صورتحال سے نپٹنے کیلئے تعینات کیا گیا۔ ہڑتال کال اور نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر شہر خاص کے حساس علاقوں گذشتہ شب ہی پولیس گاڑیوں کے ذریعے گشت کا انتظام کیا گیا تھا اور حساس علاقوں میں پولیس اور سی آر پی ایف کے سینکڑوں اہلکاروں کی تعیناتی عمل میں لائی گئی تھی۔اہلکاروں کو اہم سڑکوں ،چوراہوںاور شاہراہوں پر تعینات کیاگیا تھا۔ شہر خاص کے خانیار، رعنا واری، مہاراج گنج، نوہٹہ، صفا کدل اور کرالہ کھڈ کے تحت آنے والے علاقوں میںجزوی بندشیں عائد کی گئی تھیں۔ پابندیوں کے باعث نوہٹہ کی تاریخی جامع مسجد میں نماز جمعہ ادا کرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ مسجد کی طرف جانے والے تمام راستے مکمل طور سیل کردئے گئے تھے اور وہاں کی طرف جانے کی کسی کو اجازت نہیں دی گئی۔تاریخی جامع مسجد کے تمام دروازوں کو مقفل کیا گیا تھا اور اس کے گرد وپیش بھاری تعداد میں سیکورٹی فورسز کی نفری تعینات کی گئی تھی تاکہ کوئی بھی شخص اس تاریخی مسجد میں داخل نہ ہوسکے۔ادھرسیول لائنز میں کسی بھی طرح کی ممکنہ احتجاجی ریلی کو ناکام بنانے کے لئے سینکڑوں کی تعداد میں سیکورٹی فورس اہلکار تعینات کئے گئے تھے۔ تاہم شہر کے سول لائنز ائریا میں اگر چہ اہلکاروں کی تعیناتی عمل میں لائی گئی تھی مگر لوگوں کی نقل و حمل پر کسی بھی قسم کی کوئی پابندی نہیں تھی۔ شہر کے کم وبیش تمام علاقوں میںغیر مہلک اسلحہ اور آلات سے لیس سیکورٹی فورسز اور پولیس کو امکانی گڑبڑ سے نمٹنے کیلئے تیار حالت میں دیکھاگیا۔