وزیر داخلہ کی صدارت میں سیکورٹی جائزہ میٹنگ

 سرینگر//مرکزی وزیر اداخلہ راج ناتھ سنگھ نے سرینگر میںریاست کی مجموعی سیکورتی صورتحال کاجائزہ لیا،جس کے دوران جنگ بندی اور امرناتھ یاترا کے علاوہ دراندازی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ میٹنگ میں فیصلہ لیا گیا کہ ممکنہ طور پر عید سے قبل دہلی میں ایک اور میٹنگ کے دوران جنگ بندی میں توسیع کا فیصلہ لیا جائے گا۔ راج ناتھ سنگھ جمعرات کو سرینگر پہنچے جہاں پر انہوں نے سیکورٹی جائزہ میٹنگ کی قیادت کی۔ مرکز کی طرف سے ماہ رمضان مین عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشنوں کو روکنے کے اعلان کے بعد یہ پہلی سیکورٹی جائزہ میٹنگ تھی،جس کے دوران جی اﺅ سی15ویں کور کے علاوہ ریاستی پولیس کے سربراہ اور سراگ رساں ایجنسیوں کے اعلیٰ افسران کے علاوہ نیم فوجی دستوں اور دیگر سیکورٹی ایجنسیوں کے اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔ذرائع کا کا کہنا ہے کہ میٹنگ کے دوران مرکزی وزیر داخلہ کو جنگ بندی کے دوران ریاست بالخصوص وادی کی مجموی صورتحال سے آگاہ کیا گیا۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ مرکزی وزیر داخلہ کو اس مدت کے دوران جنگجویانہ حملوں،اور ہلاکتوں سے متعلق بھی اعداد شمار پیش کی گئی،جو کہ تسلی بخش تھے۔دفاعی ذرائع کے مطابق وزیر داخلہ نے مجموعی طور پر وادی کی صورتحال کو جنگ بندی اعلان کے بعد مطمئن قرار دی۔ان ذرائع کے مطابق دراندازی کی کچھ کوششوں اور گرینڈ حملوں کو چھوڑ کر وادی میں جنگ بندی کے بعد صورتحال ،اور ماحول بہتر ہوا،اور مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے بھی اس پر اطمنان کا اظہار کیا۔ذرائع کے مطابق عید سے قبل ہی ممکنہ طور پر دہلی میں ایک اور سیکورٹی جائزہ میٹنگ کا انعقاد ہپوگا،جس میں سیکورٹی کے اعلیٰ کمان کے افسران شرکت کریں گے،اور اسی میٹنگ میں جنگ بندی میں مزید توسیع کرنے کے فیصلے کا بھی اعلان کیا جائے گا۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ عید کے موقعہ پر اعتماد سازی کے اقدامات کے تحت اس طرح کا فیصلہ لینا خارج از امکان نہیں ہے،تاہم اس دوران تمام صورتحال کا احاطہ کیا جائے گا۔معلوم ہوا ہے کہ میٹنگ میں امرناتھ یاتر اور اس کی سیورٹی کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا،جبکہ سیکورٹی ایجنسیوں نے وزیر داخلہ نے یاتریوں کی حفاظت کیلئے اٹھائے جانے والے اقدامات کے بارے میں بھی جانیاری فرہم کی۔