نیشنل کانفرنس ہی ریاست کے تشخص کی حفاظت کرسکتی ہے

 
کپوارہ// نیشنل کانفرنس کے اہتمام سے اتوار کو ہندوارہ میں ایک پارٹی کنونشن منعقد کیا گیا جس میں کارکنان کی بھاری تعداد نے شرکت کی ۔اس موقع پر نیشنل کا نفرنس کے لیڈر اور نامزد پارلیمانی امیدوار محمد اکبر لون نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ہی ریاست جمو ں و کشمیر کے تشخص کی حفاظت کرسکتی ہے اور اس کے ساتھ کسی کو چھیڑ چھا ڑ کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔انہو ں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس دفعہ370اور35اے کابھر پور دفاع کرے گے۔انہو ں نے پارٹی کی جانب سے اپنے اس موقف کو ایک بار پھر دہرایا کہ اگر نیشنل کانفرنس بر سر اقتدار آئی تو وہ  پبلک سیفٹی ایکٹ قانون کو کالعدم کریں گے ۔ لون نے کہا کہ نیشنل کانفرنس اسمبلی انتخابات میں ریاست کے تینو ں خطوں میں سب سے بڑی پارٹی ابھر کر سامنے آئے گی اور لوگو ں کی امنگوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے پائیدار حل کے لئے بات چیت کرے گی اور اس کے لئے اس پارٹی کو ریاست کے لوگو ں کی مکمل حمایت حاصل ہے ۔جماعت اسلامی پر عائد پابندی پر تبصرہ کرتے ہوئے محمد اکبر لون نے کہا کہ مرکز کی جانب سے جماعت اسلامی پر پابندی سے کشمیریو ں کے جذبات کو دبایا نہیں جاسکتا ہے ۔انہوں نے پیپلز کانفرنس پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ اس پارٹی نے لوگو ں کو دھوکہ دیا اور بی جے پی کے ساتھ ہاتھ ملاکر یہ پارٹی لوگو ں کے سامنے بے نقاب ہوگئی ۔اس دوران پارٹی کے دیگر لیڈران چودھری محمد رمضان ،قیصر جمشید لون ،شفقت وٹالی ،جاوید احمد ڈار اور ناصر خان نے بھی خطاب کیا ۔