نیشنل کانفرنس کی تنظیمی اکائیاں اب امن کمیٹیاں ہون گی

سرینگر//ریاست جموں وکشمیر کی موجودہ مخدوش صورتحال کے پیش نظر صدرِ نیشنل کانفرنس ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے پارٹی کی تمام تنظیمی اکائیوں کو امن کمیٹیوں میں تبدیل کرنے کے احکامات صادر کردیئے ہیں۔ پارٹی ہیڈکوارٹر نوائے صبح کمپلیکس میں ایک غیر معمولی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ ہماری جماعت نے ہمیشہ بھائی چارے اور امن و امان کی ششمع کو فروزان رکھنے کیلئے ہمیشہ کام کیا ہے۔ حتیٰ کہ ملک کی تقسیم کے مشکل وقت بھی ہم نے مذہبی ہم آہنگی کی ریت کو قائم و دائم رکھا۔ بھارت کے بانی رہنما آنجہانی گاندھی جی کو اُس وقت صرف کشمیر میں روشنی کی کرن نظر آئی جب پورا برصغیر آگ کی لپٹوں اور خون میں لت پت تھا۔ریاست کے سیکولر کردار ، مذہبی ہم آہنگی اور آپسی بھائی چارے کو ٹھیس پہنچانے والے عناصر کے مذموم اداروں کو ناکام بنانا وقت کی اہم ضرورت قرار دیتے ہوئے صدرِ نیشنل کانفرنس نے کہا کہ ریاست کی سب سے پرانی اور سب سے بڑی عوامی جماعت ہونے کے ناطے ہم پر یہ فرض بنتا ہے کہ ہم امن اور بھائی چارے کو بنائے رکھنے میں اپنا بھر پور رول نبھائیں۔انہوں نے کہا کہ ہمارے سامنے مرحوم شیخ محمد عبداللہ کے سنہری اصول ہیں، جو ہمارے لئے مشعل راہ ہیں۔ دریں اثناء ڈاکٹر فاروق عبداللہ شیرکشمیر میڈیکل انسٹی چوٹ صورہ میں آڈیٹوریم کی تعمیر کیلئے اپنے ایم پی فنڈ میں سے ایک کروڑ روپے واگذار کیا۔ یاد رہے کہ انہوں نے سکیمز کے یوم تاسیس کی تقریب پر ادارے کیلئے آڈیٹوریم کی تعمیر کیلئے رقومات دینے کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ میڈیکل انسٹی چوٹ کو اپنی مختلف تقاریب کے انعقاد کیلئے ایس کے آئی سی سی یا دیگر مقامات پر جانا پڑتا تھا اور اب آڈویٹوریم کے قیام سے ادارے تمام تقریبات اپنے ہی آڈیٹوریم میں منعقد کرسکے گا۔