نوگام ماور میں بھاری گاڑیاں چلانے سے پُل ڈھہ جانے کا خدشہ

کپوارہ//نوگام ماور میں دو دہائی قبل نالہ پر عبور و مرور کے لئے ایک پُل تعمیر کیا گیا جس کے بعد انجینئرو ں نے اس پُل کو صرف چھو ٹی گاڑیو ں کے چلنے کے لئے محفوظ قرار دیا اور پُل کے دو نو ں اطراف میں دو سائن بورڈ نصب کئے گئے ہیں جس پر لکھا گیا کہ یہ پل صرف چھو ٹی گا ڑیو ں کے لئے ہی محفو ظ ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ کافی عرصہ تک اس پل پر صرف چھو ٹی گا ڑیو ں نے ہی سفر کیا اور وقت گزر نے کے ساتھ ساتھ کچھ خود غرض ڈرائیورو ں نے اس پل پر ٹرک اور ٹریکٹر چلائے  جس کی وجہ سے اس پل کو ٹوٹ جانے کا اندیشہ لا حق ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ بڑے پل کی عدم دستیابی کی وجہ سے آج بھی کوئی بڑی گاڑی سامان لیکر نوگام نہیں پہنچ پاتی ہے۔ مقامی لوگو ں کامزیدکہنا ہے کہ کچھ سال قبل نیا پل تعمیر کرنے کے لئے ایک سروے بھی کیا گیااور لوگو ں نے ریشی واری کے مقام پر پل تعمیر کرنے کی تجویز پیش کی لیکن تا حال اس پر عمل در آمد نہیں ہوا ۔مقامی لوگو ں کا مزید کہنا ہے کہ اگر پل پر چھو ٹی گا ڑیو ں کے ساتھ ساتھ بڑی گا ڑیا ں بھی چل پڑیں تو وہ وقت دور نہیں ہے جب پل کو نقصان پہنچ جائے گا جس کے بعد نوگام کا رابطہ دیگر علاقوں سے منقطع ہوجائے گا ۔لوگو ں نے کہا’’ ہم نے متعلقہ محکمہ کو بھی آگاہ کیا لیکن انہو ں نے کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی‘‘ ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ علاقہ کایہ واحد پل اگر ٹوٹ گیا تو عبور و مرور مشکل بن جائے گا ۔انہو ں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ اگر نالہ پر ایک بڑا اور پختہ پل تعمیر کیا جائے تو لوگو ں کی مشکلات کا ازالہ ہو جائے گا ۔