مینڈھر کا اکلا ویہ ماڈل سکول سنگ بنیاد تک ہی محدود

 
 
مینڈھر//سب ڈویژن مینڈھر کے گائوں بھیرہ میںقبائلی بچوں کی تعلیم کو یقینی بنانے کیلئے دسمبر 2017میں اکلاویہ ماڈل اسکول کا سنگ بنیاد رکھا گیا تھا لیکن دو برس گزرنے کے باوجود بھی سکول کی عمارت کا مزید کام شروع ہی نہیں کیا گیا ۔مقامی لوگوں نے ریاستی انتظامیہ اور پی ڈی پی و بھاجپا کی سابقہ ریاستی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ سکول کا سنگ بنیادرکھنے کے بعد قبائلی امور کے سابقہ وزیر نے عوام کو یقین دہانی کروائی تھی کہ جلد ہی سکول میں کلاسز شروع کی جائیں گی لیکن لگ بھگ دو سال گزرنے کے باوجود بھی کلاسیں شروع نہیں کی گئی اور نہ ہی عمارت کا مزید کام کروایا گیا ۔عوام کے مطابق متعلقہ محکمہ کی لاپراہی کی وجہ سے ایک بہت بڑی پسی آنے کے بعد کئی مہینوں تک اسکول کا کا م بند رہاجبکہ جس وقت اسکول کا سنگ بنیاد رکھا گیا تو قبائلی امور کے اعلی افیسران نے لوگوں سے یہ کہا تھاکہ ہم عمارتیں کرائے پر لیکر اسکول کا کام 2018میں شروع کریں گے لیکن ایسا نہیں ہوا جسکی وجہ سے اسکول کی عمارتیں بھی ابھی تک مکمل نہیں ہوپائی اور کئی مہینوں تک کا م بھی بند رہا۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ مذکورہ علا قہ میں آئی پسی کو ہٹانے کیلئے متعلقہ ایجنسی کی جانب سے کوئی کام شروع نہیں کیا گیا ۔انہوں نے ضلع انتظامیہ اور متعلقہ محکمہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ مذکورہ سکول کو جلداز جلد مکمل کر کے بچوں کی تعلیم کا بندو بست کیا جائے ۔متعلقہ محکمہ کے مطابق آئندہ چھ ماہ میں کچھ عمارتیں مکمل ہو سکتی ہیں لیکن مذکورہ عمارت میں مزید وقت درکار ہے ۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے کہاکہ کرایہ کی عمارت میں سکول چلانے کا کوئی بندو بست نہیں ہے البتہ جب سکول تیار ہو گا تو کلاسیں شروع کی جائیں گی ۔