منشیات اور نقب زنی کا الزام | کپوارہ میں4افراد سیفٹی ایکٹ کے تحت جیل منتقل

اشرف چراغ
کپوارہ//شمالی ضلع کپوارہ میں پولیس نے چار افراد کو منشیات اور نقب زنی کے الزام میںپبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت جیل بھیج دیا ہے۔پولیس کے مطابق بشیر احمد پیر عرف بشیر پنڈت ساکن ہری قادر آباد،عبد الرشید ملک ساکن ملک محلہ کپوارہ اور ظہور احمد چک ساکن کھو ڈ پار کرنا ہ عرصہ دراز سے منشیات کے دھندہ میں ملو ث ہیں اور ان کے خلاف مختلف پولیس تھانوں میں کیس درج ہیں ۔پولیس کے مطابق انہوں نے لوگو ں کا جینا حرام کردیا تھا اور منشیات کی سمگلری کر رہے تھے ۔اس دوران نقب زنی میں ملوث حارث احمد شیخ عرف اندھا قانون ساکن ٹکرنے کپوارہ اور ہندوارہ میں کئی بار نقب لگائی اور پولیس کی گرفتاری کے باجود بھی اس کام سے باز نہیں آتاتھا جس کے بعد حارث پر پبلک سیفٹی ایکٹ عائد کیا گیا اور چارو ں کوراجوری اور پونچھ کی جیلو ں میں منتقل کیا گیا۔ادھر پولیس کا کہنا ہے کہ منشیات کے خلاف ان کی جنگ جاری ہے اور تازہ کارروائی کے ودران مزید تین افرادکو گرفتار کر کے ان کی تحویل سے نشیلی ادویات ضبط کی گئیں ۔لولاب وادی میں ایس ایچ او لالپورہ مشتاق احمد کی قیادت میں ایک پولیس ٹیم نے ایک مصدقہ اطلاع ملنے پر ثاقب احمد بٹ اور آصف احمد وانی کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ۔پولیس کو پہلے ہی ان کے بارے میں شکایت ملی تھی کہ یہ منشیات کے دھندہ میں ملو ث ہیں ۔پولیس کے مطابق دوران تلاشی ان سے نشیلی ادویات ضبط کی گئیں جس کے بعد ان کے خلاف ایک کیس زیر ایف آئی آر نمبر  22/2022درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی گئی۔پولیس کے مطابق درگمولہ پولیس چوکی کی ایک خصوصی ٹیم نے چوکی افسر عاشق حسین کی قیادت میں ایک مصدقہ اطلاع ملنے پر بی ایڈ کالج درگمولہ کے نزدیک ناکہ لگایا جس دوران بیدار احمد میر ساکن جگر پورہ جو کپوارہ قصبہ کی طرف آرہاتھا کو گرفتار کیا اور ان کی تحویل سے نشیلی ادویات کو ضبط کیا ۔پولیس نے گرفتار کئے گئے افراد کے خلاف ایک کیس زیر ایف آئی آر نمبر 103/2022درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ۔