مزید خبریں

لیفٹننٹ جنرل پشپیندر سنگھ نے ’رائزنگ اسٹار کور ‘کی کمان سنبھالی

سرینگر // لیفٹننٹ جنرل پشپیندر سنگھ نے جمعرات کو ہماچل پردیش میںرائزنگ اسٹار کور کے 17ویں کور کمانڈر کا عہدہ سنبھالا۔سی این آئی کے مطابق لیفٹننٹ جنرل پشپیندر سنگھ کو حال ہی میں رائزنگ اسٹار کور کے ، کور کمانڈر کے عہدے پر تعینات کیا گیا جس کے بعد انہوں نے آج با ضابطہ طور پر اپنا عہدہ سنبھالا ۔ لیفٹنٹ جنرل پشپیندر سنگھ انڈین ملٹری اکیڈمی کے سابق طالب علم ہیں اور انہیں دسمبر 1987 میں 4 پیرا (خصوصی افواج) میں کمیشن دیا گیا تھا۔35 سال سے زیادہ وقت پر محیط ایک شاندار کیریئر میںانہوںنے  جنرل آفیسر ، آپریشن پون، آپریشن میگھدوت، آپریشن رکھشک، آپریشن آرکڈ میں حصہ لیا ہے اور لبنان اور سری لنکا میں اقوام متحدہ کے امن مشن میں کام کیا ہے۔رائزنگ سٹار کور سے پہلے، وہ لکھنؤ کی سنٹرل کمان کے چیف آف سٹاف ہونے کے علاوہ انفینٹری سکول مہو اور سٹریٹجک فورسز کمانڈ میں خدمات انجام دے چکے ہیں۔ 

 

 

 

انتظامیہ قیمتوں کو اعتدال پر رکھنے میں ناکام: لائیگرو

اشیائے ضروریہ کے داموںمیںاضافہ سے عوام پریشان

سرینگر//پی ڈی پی کے یوتھ سیکریٹری عارف لائیگرو نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافے پرتشویش کااظہار کیا ہے ۔انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ حکام اشیائے ضروریہ کی قیمتوں کو اعتدال پر رکھنے کیلئے کوئی قدم نہیں اُٹھارہے ہیں۔قیمتوں پر کوئی کنٹرول نہیں اور لوگ اونچے داموں خریدنے پرمجبور ہیں۔ لائیگرونے کہاکہ انہیں جمعرات کو متعددکالیں موصول ہوئیں جن میں لوگوں نے شکایت کی کہ سبزیوں کے علاوہ مرغ،گوشت،مچھلیوں کے دام بڑھا دیئے گئے ہیں۔لائیگرونے کہا نہ صرف پرچون فروش بلکہ تھوک بیوپاری بھی مہنگائی کے ذمہ دار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ نانوائیوں نے بھی روٹی کاوزن کم کیا ہے ۔

 

 

 

 

کنزر میں ژالہ باری سے نقصان 

متاثرین کو معاوضہ دیاجائے:غلام حسن میر

سرینگر// اپنی پارٹی کے سینئر نائب صدر غلام حسن میر نے لالپورہ، دھوبی ون ،ماموسہ کے چند علاقوں اور دیگر مضافاتی دیہات میں ژالہ بھاری سے باغ مالکان کو ہوئے بھاری نقصان پرگہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ایک بیان میں میر نے حکومت پرزور دیا ہے کہ فوری طور متاثرہ باغ مالکان کو مناسب معاوضہ فراہم کیاجائے جنہیں بھاری نقصان ہوا ہے۔انہوں نے کہاکہ کنزر حلقہ کے متعدد علاقہ جات میں طوفانی ہواؤں سے فصلوں اور باغات کو بہت نقصان ہوا ہے۔ انہوں نے کہاکہ انتظامیہ کو چاہئے کہ متاثرہ علاقوں میں زمینی سطح پر ٹیموں کو روانہ کیاجائے اور نقصانات کا تخمینہ لگاکر متاثرین کو معقول معاوضہ دیاجائے۔ میر نے کہاکہ میوہ کاشتکاروں کی مالی حالت پہلے ہی خستہ تھی، بہت سارے ایسے تھے جوکہ کھاد اور کیڑے مار ادویات بھی خریدنے کی پوزیشن میں نہیں تھے بلکہ بہت سارے لوگوں نے بینکوں سے پہلے ہی قرضہ جات لئے تھے اوراُ ن کی مشکلات مزید بڑھا دی ہیں۔ انہوں نے حکومت پرزور دیا ہے کہ متاثرہ کسانوں، باغ مالکان کے لئے خصوصی مالی پیکیج کا اعلان کیاجائے تاکہ وہ دوبارہ سے اپنے پاؤں پڑ کھڑے ہوسکیں۔

 

 

مہاویر جینتی پر ڈاکٹر فاروق کی مبارکباد

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے مہاویر جینتی کے موقع پر عوام خصوصاً جین برادری کو مبارکباد پیش کی ہے۔ انہوں نے اپنے پیغام میں کہا کہ مہاویر کی تعلیمات آج کے دور کے لئے انتہائی موزوں اور اہم ہیں۔ دنیا میں محبت اور بھائی چارہ کے قیام کیلئے مہاویر کی زندگی سے تحریک ہے۔ اُن کے امن، عدم تشدد اور ہم آہنگی کے پیغامات ہم لوگوں کیلئے مشعل راہ ہیں۔پارٹی کے صدرِ صوبہ جموں ایڈوکیٹ رتن لعل گپتا، اجے سدھوترا، بابو رام بال نے بھی مبارکباد پیش کی ہے۔

 

حکیم یاسین کی بیساکھی پر مبارکباد

 نیوز ڈیسک

 

سرینگر//پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے  چیئرمین حکیم یاسین نے بیساکھی کے موقع پر لوگوں خصوصاً سکھ برادری کو مبارکباد پیش کی ہے۔   اپنے تہنیتی پیغام میں حکیم یاسین نے کہا کہ بیساکھی کا تہوار فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور بھائی چارے کو پھر سے زندہ کرتا ہے جو ہماری ثقافت اور اخلاقیات کی پہچان ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی ہے کہ بیساکھی کا تہوار جموں و کشمیر میں امن اور خوشحالی کی نوید لیکرآئے گا۔

 

 

 تعلیمی ماحولیاتی نظام اور بنیادی ڈھانچے کی اِصلاح 

 ایک سال میں 50نئے کالجوں کے قیام سے 25,000نشستوں کا اِضافہ

 2,500 کنڈر گارٹن قائم اور 2,000 مزید قائم کئے جارہے ہیں

سرینگر//جموںوکشمیر میں تعلیمی ماحولیاتی نظام اور بنیادی ڈھانچے کی اِصلاح کے مقصد سے صرف ایک برس میں 50 نئے کالجوں میں 25,000 کالجوں کی نشستوں کے اِضافے سے 70 برسوں میں تعلیمی صلاحیت میں اِضافہ کیا گیا۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کے تحت موجودہ اِنتظامیہ ملک میں اعلیٰ تعلیم کے لئے بہترین بنیادی ڈھانچہ تشکیل دے رہی ہے۔ سرکاری ذرائع کے مطابق،’’دو کالج آف آرکیٹیکچر اور ایک انجینئرنگ کالج بھی قائم کیا گیااورآئی آئی ٹی اور آئی آئی ایم ریکارڈ وقت میں قائم کیا گیا تھا۔‘‘حکومت تعلیمی ایکو سسٹم کی تبدیلی کے لئے اِصلاحات لا رہی ہے جس سے خلا کو پُرکیا جا رہا ہے اور نوجوان نسل کے لئے مواقع پیدا کئے جارہے ہیں۔حکومت کی توجہ قدر پر مبنی تعلیم رہی ہے اورسائنسی اور تکنیکی علم اور اِنفرادی ترقی کے لئے ماحول پیدا کرنا ہے ۔سکولی تعلیم محکمہ کے ایک اہلکار نے کہا ،’’ ہم قدر پرمبنی علم کے نظام سے نوجوان ذہنوں کی تشکیل کے لئے طلباء اور اَساتذہ کے درمیان ایک بہترین توازن پیدا کرنے کے لئے کام کر رہے ہیں۔‘‘نیشنل اسسٹمنٹ اینڈ ایکر یڈیٹیشن کونسل ( این اے اے سی ) کی طرف سے ’’جموںوکشمیر اور لداخ یوٹیوں کی ایکریڈیٹیشن رِپورٹوں کے تجزیہ‘‘کی کتاب کی رونمائی کے دوران این اے اے سی کی طرف سے سینٹرل یونیورسٹی آف کشمیر ( سی یو کے) کے اشتراک سے منعقد ہ ایک تقریب کے دوران خطاب کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا نے کہا کہ یونیورسٹی اور کالجوں میں بے پناہ طاقت ہے اور نصاب میں ایک چھوٹی سی تبدیلی سماجی و اِقتصادی ماحول پر فیصلہ کن اَثر ڈال سکتی ہے۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا نے کہا کہ دُنیا ایک ایسے دور کی طر ف بڑھ رہی ہے جس پر علمی معیشت کا غلبہ ہوگا ۔ ہمارا سب سے بڑا اثاثہ اِنسانی سرمایہ ہوگا جو ہنر اور تخلیقی صلاحیتوں کا مجموعہ ہوگا۔لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا نے کہا،’’ ہمارا سب سے بڑا اور مضبوط اثاثہ انسانی سرمایہ ہونا چاہیے جو ہنر، مہارت اور تخلیقی صلاحیتوں کا مجموعہ ہے۔جموںوکشمیر  حکومت مسلسل نئے آلات کے ساتھ تعلیمی نظام میں اصلاح کر رہی ہے تاکہ مطلوبہ مہارت کے سیٹ تیار کئے جا سکیں۔‘‘جموںوکشمیر میں تعلیمی شعبے میں تیزی سے بدلتے ہوئے تعلیمی نظام اور بدلتی ہوئی مارکیٹ ڈائی نامکس کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے اِصلاحات کی جارہی ہیں ۔ یونیورسٹی اور کالجوں میں نصاب میں تبدیلی جموںوکشمیر کے سماجی و اِقتصادی ماحول پر فیصلہ کن اَثر ڈال سکتی ہے۔ایک اہلکار نے کہا کہ یونیورسٹیوں اور کالجوں میں کورسوں کو بہتر بنانے کی کوششیں جاری ہیں تاکہ سیکھنے اور اِختراع کے لئے ساز گار ماحول پیدا کیا جاسکے جس کا مقصد ہر طالب علم کو تکنیکی اور سماجی ہنروں سے بااِختیار بنانا ہے تاکہ کاروباری سوچ کو فروغ دیا جاسکے ۔قومی تعلیمی پالیسی ( این اِی پی )۔2020ء کی عمل آوری سے زائد اَز 2,500 کنڈر گارٹن قائم کئے گئے اور مزید 2,000 کیپکس بجٹ کے تحت قائم کئے جارہے ہیں ۔ 9,000 سرکاری پرائمری سکولوں میں پری پرائمری کلاسوں میں 80,000 طلباء پہلے ہی داخل ہیں۔محکمہ تعلیم کے اعداد و شمار کے مطابق چھٹی اور آٹھویں جماعت کے 9,643 سرکاری سکولوں کو ملحقہ ہائی اور ہائیر سکینڈری سکولوں کے ساتھ میپ کیا گیا تاکہ 803 ووکیشنل لیبارٹریوں میں پڑھائے جانے والے ووکیشنل کورسوں پر بنیادی مہارتیں فراہم کی جاسکیں۔جموںوکشمیر میںفائونڈیشن اورعددی خواندگی پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے شروع کی گئی سٹوڈنٹ ٹیچر مینٹر شپ اقدام کے تحت ہر استاد پرائمری کلاسوں کے 10 طلباء کی رہنمائی کرے گا۔

 

 

شاعر جعفر علی اثرفوت

ادبی انجمنوں کااظہار تعزیت 

 

 فیاض بخاری

بارہمولہ//شمالی کشمیرکے معروف شاعر شیرعلی مشغول کے برادرِاصغر جعفر علی اثر انتقال کرگئے ۔خاندانی ذرائع نے بتایاکہ مرحوم کی اجتماعی فاتحہ خوانی 17اپریل بروز اتوار اُن کے آبائی گھر واقع دلنہ بارہمولہ میں انجام دی جائے گی ۔ادھر مختلف ادبی انجمنوں بشمول اُردورائٹرس فورم بارہمولہ ،انہار کشمیرگروپ،بزم شعروادب سنگرامہ ،گلشن اردوکشمیر،بزم دبستان ادب رفیع آباد،دائرہ ادب دلنہ ،بہار ِادب تلگام پٹن،افروٹ ادبی فورم وانی گام پٹن اوردیگرکئی ادبی وسماجی تنظیموںنے بھی جعفر علی کے انتقال پر گہرے رنج وغم کااظہار کرتے ہوئے سوگوار کنبے سے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔