مزید خبرں

خانقاہ اکملیہ میں مولانا قانونگو کا خطاب آج

سرینگر//خانقاہ اکملیہ حول میں قبل از نماز جمعہ ایک خصوصی اجلاس منعقد ہوگا جس میں معراج العالم کے اہم گوشوں پر انجمن حمایت الاسلام کے صدر مولانا خورشید احمد قانونگو بیان کرینگے۔ 
 

پارلیمانی چنائو 2019

سرینگر میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی رینڈومائزیشن

نیوز ڈیسک
 
سرینگر//سرینگر پارلیمانی نشست کے لئے ریٹرینگ آفیسر ڈاکٹر شاہد اقبال چودھری کی نگرانی میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی دوسرے مرحلے کے تحت رینڈومائزیشن کی گئی۔اس موقعہ پر ای سی آئی کی طرف سے سرینگرپارلیمانی نشست کے لئے مقرر کئے گئے مشاہدین بھی موجود تھے ۔آخری مرحلے رینڈومائزیشن کے دوران ای وی ایم اوروی وی پی اے ٹی مشینوں کا انتخاب کرکے انہیں اسمبلی حلقوں کو الاٹ کیا گیا۔پہلے اور دوسرے مرحلے کی رینڈومائزیشن کے دوران ای وی ایم سافٹ ویئر منیجمنٹ کے ذریعے الاٹمنٹ کی گئی۔اس دوران سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کو ان مشینوں کی ڈائون لوڈڈ فہرست بھی فراہم کی گئی۔
 

مشتاق احمد ہمدانی کا انتقال

ڈاکٹر فاروق کا اظہارِ تعزیت

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور عمر عبداللہ نے مرحوم ایڈوکیٹ غلام محی الدین ہمدانی کے فرزند مشتاق احمد ہمدانی(زہرہ) ساکن خانقاہِ معلی کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے۔ ڈاکٹر فاروق نے اس سانحہ ارتحال پر مرحوم کے برادر ڈاکٹر مظفر ہمدانی کیساتھ ٹیلی فون پر تعزیت کی اور ڈھارس بندھائی۔ علی محمد ساگر نے بھی اس سانحہ ارتحال پر مرحوم کے جملہ سوگوران کیساتھ تعزیت کا اظہار کیا۔
 

شہر میں بیت الخلائوںکی عدم موجودگی سے خواتین کو مشکلات کا سامنا 

 سرینگر//سٹی رپورٹر//شہر سرینگرکے کئی علاقوں میں بیت الخلائوںکی عدم موجودگی سے خاص طور پر خواتین کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے  ۔شہر اور اس کے مضافاتی علاقوں کے بازاروں ،بس اڈوں ،پارکوں میں بیت الخلاء کی عدم دستیابی لوگوں کے لیئے ذہنی اضطراب کی وجہ بن چکی ہے کیونکہ ان علاقوں میں رفا حاجت کیلئے استعمال میں لائے جانے والی بیت الخلاء تعمیر نہیں کئے جارہے ہیں ۔ سرینگر کے سب سے بڑے بٹہ مالو ،پانتہ چھوک اور پارمپورہ بس اسٹینڈوںمیںبیت الخلاء نہ ہونے کی وجہ سے بسوں میں سفر کرنے والے خواتین مسافروں کو خاص طور پر شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ایک فیلڈ آفیسر نے بتایا کہ بس اڈئوں میں بیت الخلاء نہ ہونے کے برابر ہے اور یہ کہ اگر چہ دو بیت الخلاء پہلے تعمیر کرائے گئے تھے مگر ان کی حالت بالکل خستہ ہوچکی ہے بلکہ مسافروں کا دباؤ دیکھ کر وہ ناکافی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس بارے میں اگرچہ کئی بار متعلقہ ایجنسیوں اورانتظامیہ سے رابطہ قائم کیا گیا تاہم آج تک کوئی بھی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی ۔