مزید خبرں

مینڈھر میں پانی کے نکاسی کے نظام کو  بہتر بنایا جائے :ندیم 

مینڈھر //پی ڈی پی لیڈر ندیم رفیق خان نے انتظامیہ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مینڈھر قصبہ میں نکاسی آب نظام کو بہتر بنایا جائے ۔یہاں جاری ایک بیان میں پی ڈی پی لیڈر نے کہاکہ ہر برس برسات کے دنوں میںمینڈھر قصبہ میں نکاسی آب نظام بُری طرح سے ناکام ہو جاتا ہے جس کی وجہ سے مقامی لوگوں کیساتھ ساتھ تاجر پیشہ افراد کا لاکھوں کا نقصان ہو تا ہے لیکن انتظامیہ کی جطر ف سے مذکورہ نظام کی بہتری کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جاتی ۔انہوں نے کہاکہ اس وقت مینڈھر میں نکاسی آب کیساتھ ساتھ صفائی ستھرائی کا بھی فقدان پایا جاتاہے جبکہ نالیوں میں جمع ہو ئی گندگی بارشوں کے دوران نکاسی آب کو شدید متاثر کر تی ہے جس کی وجہ سے بارشوں کا پانی نالیوں کے بجائے سڑکوں اور گلیوں میں آجا تا ہے ۔گزشتہ روز مینڈھر میں ہوئی شدید بارش کے دوران دکانداروں کے نقصان پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا موصوف نے ضلع انتظامیہ پو نچھ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ مینڈھر قصبہ میں نکاسی آب کو بہتر بنانے کی طرف توجہ دی جائے تاکہ لوگوں کا نقصان نہ ہو۔انہوںنے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ وہ معاملہ میں ذاتی طور پر مداخلت کر کے فنڈز وگزار کرنے میں اپنا رول ادا کریں تاکہ مذکورہ نظام کو بہتر بنایا جاسکے۔
 

خواتین پنچایتی اراکین کی جگہ مرد کام چلانے پر مامور

ملازمین کو غیر ضروری طور پر ہراساں کرنے کا الزام

جاوید اقبال
مینڈھر//مینڈھر میں مختلف سرکاری محکموں کے ملازمین نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ حالیہ پنچایتی انتخابات کے دوران مختلف پنچایت حلقوں سے منتخب ہو ئی خواتین کی جگہ پنچایتی کام کاج چلانے کیلئے ان کی جگہ مردوں کی طرف سے ان کو دفاتر میں آکر غیر ضروری طورپر ہراساں کیا جارہاہے ۔ملازمین نے کہاکہ اگر منتخب پنچایتی اراکین دفاتر میں آتے ہیں تو ان کو ریکارڈ ودیگر ضروری لورزامات دئیے جاسکتے ہیں لیکن ان کی جگہ پرآئے ہو ئے ان کے شوہر ودیگر مرد دفتری کام کاج میں غیر ضروری طور پر خلل ڈالتے ہیں ۔ملازمین نے اپنا نام نہ ظاہر کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ وہ پنچایتوں کے منتخب نمائندوں کیساتھ پورا تعاون دینے کیلئے تیار ہیں لیکن  بیویوں کی جگہ ان کے شوہر دفاتر میں آکر ان کو پریشان کرتے ہیں جس کی وجہ سے دفتری کام کاج متاثر ہو تا ہے ۔انہوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ پنچایتو ں کی خواتین سرپنچوں اور پنچوں کی جگہ ان کے شوہر وں کی جانب سے ملازمین کو تنگ کرنے کے عمل کا سنجیدہ نوٹس لیا جائے جبکہ اس عمل پر پابندی عائد کی جائے تاکہ ملازمین کے دفتری کام میں خلل نہ پیدا ہو ۔
 
 

نوجوانوں کیلئے پروگراموں کا اہتمام 

راجوری//سرحدی ضلع راجوری میں فوج کی جانب سے نوجوانوں کیلئے پروگراموں کا اہتمام کیا گیا ۔بین اقوامی یوتھ سکل ڈے کے عنوان سے منعقدہ پروگراموں کے دوران فوجی آفیسران نے مرکزی حکومت کی جانب سے شروع کردہ سکل ڈیو لپمنٹ پروگراموں کے سلسلہ میں نوجوانوں کو بیدار کیا ۔یوتھ سنٹر پلمہ و دیگر علا قوں میں منعقد ہ پروگراموں میں فوجی آفیسران نے بے روزگار نوجوانوں کو مذکورہ اسکیموں کا فائدہ اٹھانے کے طریقہ کار اور ضروری لورزامات کے سلسلہ میں جانکاری فراہم کی ۔ان پروگراموں میں مقامی نوجوانوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور انہوں نے فوج کی جانب سے مذکورہ پروگرام منعقد کئے جانے کا شکرایہ ادا کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ آئندہ بھی مذکورہ عمل کو جاری رکھا جائے گا ۔
 
 

باڈر روڈ آرگنائزیشن کے متعدد پروجیکٹوں کا جائزہ لیا گیا

راجوری //ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری محمود اعجاز اسد نے اعلیٰ آفیسران کا اجلاس طلب کر کے ضلع میں باڈر روڈ آر گنائز یشن (BRO)کے متعدد پروجیکٹوں کا جائزہ لیا ۔اس اجلاس کے دوران بی آر او کے پروجیکٹوں کو مزید فعال بنانے کے علا وہ راجوری تھنہ منڈی سڑک ،راجوری پونچھ شاہراہ ،کالا کوٹ ک،کلر کیری ،راجوری کنڈی بدھل ودیگر سڑکوں کی موجودہ حالت کاجائزہ لیتے ہوئے راجوری تھنہ منڈی سڑک کی خراب حالت پر تشویش کا اظہار کیا ۔انہوں نے ایک ہفتے کا وقت مقررکرتے ہوئے ہدایت جاری کیں کہ راجوری تا تھنہ منڈی سڑک میں پڑے ہوئے کھڈوں اور نکاسی آب کے نظام کو بہتر بنانے کیساتھ ساتھ سڑک کناروں پر کی گئی غیر قانونی تجاوز کو بھی ہٹایا جائے ۔بی آر او کے آفیسرنے جانکاری فراہم کرتے ہوئے کہاکہ 3.9کلو میٹر سڑک پر کام کیا گیا ہے جبکہ دیگر کام کو جلد ہی شروع کیا جائے گا ۔انہوں نے کہاکہ راجوری پونچھ شاہراہ پر کھڈوں پر بھرنے ودیگر کاموں کو بھی مکمل کرلیا گیا ہے ۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے آر گنا ئز یشن کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہاکہ بڈھا امر ناتھ یا ترا کے سلسلہ میں اپنی مشینری اور نفرادی قوت کو تیار رکھا جائے ۔اسی طرح آفیسران نے دیگر سڑکوں کی موجود حالت کے سلسلہ میں بھی تفصیل فراہم کی۔
 

عوام کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی 

فوج نے بسونی علاقے میں ٹینک فراہم کئے 

جاوید اقبال 
 
مینڈھر //مینڈھر کے سرحدی علا قہ بسونی میں عوام کو پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کیلئے فوج کی جانب سے صاف پانی جمع کرنے کیلئے ٹینک دستیاب کئے گئے ۔سرحدی علا قوں میں جہاں محکمہ پی ایچ ای اور مقامی سیول انتظامیہ کی غفلت شعاری کی وجہ سے عوام کو بنیادی سہولیات بالخصوص پینے کے صاف پانی کی شدید قلت کا سامنا کرناپڑرہا ہے ہے وہائیں فوج نے فلاحی کاموں میں اپنی شرکت کو مزید بہتر بناتے ہوئے مینڈھر کے سرحدی علا قہ بسونی میں عوام کیلئے پینے کا صاف پانی جمع کرنے کیلئے ٹینک دستیاب کئے ۔4000لیٹر گنجائش کے ان ٹینکو ں میں سے مجموعی طورپر 40کنبوں کو پینے کا صاف پانی فراہم کیا جائے گا ۔مقامی سرپنچ نے پانی کی فراہمی کا افتتاح کرتے ہوئے فوجی انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا جبکہ اس موقعہ پر متعدد مقامی افراد بھی موجود تھے۔
 

مینڈھر میں نکاسی ٔآب نظام ناکارہ 

متاثرہ دکانداروں و عام لوگوں نے انتظامیہ پر عدم توجہی کا الزام عائد کیا 

جاوید اقبال 
 
مینڈھر//مینڈھر قصبہ میں نکاسی آب نظام پوری طرح سے متاثر ہو نے کے بعد مقامی لوگوں اور تاجروں نے انتظامیہ پر غیر سنجیدہ رہنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ قصبہ کی گلیوں اور نالیوں کو بہتر بنانے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔متاثرین نے کہاکہ متعدد بار انتظامیہ سے اپیل کرنے کے باوجود بھی مذکورہ نظام کی بہتری کی طرف توجہ نہیں دی گئی جس کی وجہ سے گزشتہ روز ان کو لاکھوں روپے کے نقصان کا سامنا کرنا پڑا ۔یاد رہے کہ گزشتہ روز مینڈھر اور ملحقہ علا قوں میں ہوئی شدید بارش کے دوران قصبہ کی نالیاں بند ہو نے کی وجہ سے بارش کا پانی گلیوں میں آگیا اور اس دوران کئی دکانوں او ر ریائشی مکانات میں بھی داخل ہو گیا جس کی وجہ سے مقامی لوگوں کو کئی طر ح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔مقامی لوگوں نے محکمہ دیہی ترقی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ ہر برس بس اسٹینڈ کی بولی لاکھوں روپے لگائی جاتی ہے جبکہ محکمہ کیساتھ ساتھ دکانداروں کی جانب سے بھی صفائی کرمچاریوں کو ماہانہ پیسے دئیے جاتے ہیں لیکن پھر بھی قصبہ میں صفائی ستھرائی کی طرف کوئی دھیان نہیں دیا جاتا ۔لوگوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ مینڈھر میں صفائی ستھرائی کے نام پر خرچ کئے جانے والے لاکھوں روپے کا حساب لیا جائے جبکہ نکاسی آب کو بہتر بنانے کیلئے ترجیح بنیادوں پر اقدمات اٹھائے جائیں۔
 

سرنکوٹ میں اراضی تنازعہ پر دو گروپوں میں تصادم 

بختیار حسین
 
سرنکوٹ// سرنکوٹ میں اراضی تنازعہ کو لے کر طرفین میں آہوئے آپسی تصادم کے دوران دو افراد زخمی ہو گئے ۔تفصیل کے مطابق خاجی قادر ہ شیخ ولدجمال دین سکنہ سرنکوٹ نے کچھ سال پہلے منیر منہاس نامی شخص سے 6 کنال 19 مرلے اراضی خریدی تھی۔ جس کے بعد ان کا مکمل قبضہ رہا ہے اور ان کی کاشت بھی چلتی رہی تاہم خاجی قادرہ شیخ اپنی خریدی ہوئی اراضی میں اپنے نوجوان لڑکوں کے ساتھ مکی کی گوڈھائی کر رہا تھا کہ اچانک دوسرے گروپ کے لوگوں نے مبینہ طورپر حملہ کر دیاجس کے نتیجے میں دو افراد زخمی ہوئے۔ تاہم مضروب خالت میں ان زخمیوں کو سرنکوٹ چیک پوسٹ کے مقام پر بیچ سڑک پر رکھ کر عورتوں مردوں نیاحتجاج شروع کر لیا جس کے نتیجے میں ایک گھنٹے سے زائدتک ٹریفک نقل وخرکت معطل رہی ۔مظاہرین نے محکمہ مال پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ ان کی زمین کا ریکارڈ توڑ دیا گیا ہے جس کی وجہ سے وہ گزشتہ بانچ برسوں سے مختلف دفاتر کا چکر کاٹنے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔احتجاج کی خبر سنتے ہی پولیس کی ایک ٹیم موقعہ پر پہنچی جہاں پرپولیس آفیسران نے مظاہرین کو یقین دہانی کرواتے ہوئے کہاکہ مذکورہ معاملہ کے سلسلہ میں مقدمہ درج کر کے مزید تحقیقات شروع کی جائے گی ۔پولیس نے واقعہ میں زخمی ہو ئے افراد کو ہسپتال سرنکوٹ میں داخل کروایا جہاں پر ان کا علاج معالجہ کیا جارہاہے ۔زخمیوں کی شناخت مالی خاتون اور محمد عبداللہ شیخ کے طورپر ہوئی ہے ۔پولیس نے مزید تحقیقات شروع کردی ہے۔