مزید خبرں

پولیس ملازمین کیساتھ امتیاز

اضافی تنخواہیں دینے کامطالبہ 

حسین محتشم
 
پونچھ// نیشنل کانفرنس کے ضلع صدر او بی سی ونگ پونچھ عبدالرشید شاہ پوری نے ریاستی حکومت پر زور دیا ہے کہ ریاست میں پنچایتی انتخابات میں ڈیوٹی کرنے والے پولیس ملازمین کو بھی ایک مہینے کی اضافی تنخواہیں دی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ سول ملازمین کی اضافی واگزار کر دی گئی ہیں جبکہ پولیس ملازمین کو نظر انداز کیا گیا جو اس طبقہ کے ساتھ ناانصافی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس نے شفاف نظام بنائے رکھنے میں اہم رول نبھایا جن کو اضافی تنخواہوں میں نظر انداز کیا گیا ہے۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ پر اپیل کرتے ہوئے کہا کہ جلد از جلد پولیس ملازمین کی تنخواہیں واگزار کی جائیں تاکہ انکو بھی انصاف مل سکے۔
 

عوام پرذات پات کے خول سے باہرنکلنے پرزور

جاوید اقبال
 
مینڈھر//اسائین ناتھ یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر شہزاد ملک نے اسمبلی حلقہ مینڈھر کے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ سب لوگ اکھٹے ہو کر ایک نئے دور کا آغاز کریں ۔ان کا کہنا تھا کہ لوگ فرقہ پرستی سے باہر نکل کر کام کرنے والے لیڈر کے ساتھ چلیں تاکہ سماج کے ساتھ چلنے والا انسان اپنے آپ کو برابر کا حقدار سمجھے۔اس سلسلہ میں انھوں نے اخبار کے نام جاری ایک بیان میں کہا کہ میرا سیاست کے میدان میں کوئی دشمن نہیںاور میری یہ لڑائی نہ انصافیوں کے خلاف ہے۔ان کا کہنا تھا کہ گذشتہ کئی سالوں سے منی سیکٹریٹ کی عمارت کا کام بند ہے اور عمارت کھنڈرات نظر آ رہی ہے جبکہ مینڈھر کے اندر تعلیم کی حالت نہائت ہی خستہ ہے کیونکہ سردیوں کے موسم میں بھی بچے باہر بیٹھ کر تعلیم حاصل کرتے ہیں کیونکہ ہمارے پاس سکولوں کی عمارتوں کی نہائت ہی خستہ حالت ہے اور کئی ایسے سکول ہیں جہاں پر سینکڑوں کی تعداد میں بچے زیر تعلیم ہیں لیکن عمارت نہیں ہے جس سے بچوں کی تعلیم پر برا اثر پڑتا ہے ماہر تعلیم ڈاکٹرشہزاد ملک کا کہنا تھا کہ تعلیم کے معاملہ میں ریاستی حکومت کو آگے آنا چاہیے تاکہ غریب لوگوں کے بچے بھی اعلی تعلیم حاصل کرکے اعلی مقام تک پہنچیں اور علاقے کا نام روشن کریں۔انھوں نے مینڈھر اسمبلی حلقہ سے تعلق رکھنے والے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ فرقہ پرستی اور ذات پات سے چھٹکارا پائیں اور کام کرنے والے لوگوں کا ساتھ دیں تاکہ مینڈھر اسمبلی حلقہ تعمیر و ترقی کی طرف گامزن ہو۔کیونکہ جب انتخابات آتے ہیں تو لیڈران کئی قسم کے نعرے لگا کر لوگوں کو بیوقوف بناتے ہیں اور لوگ بھی ان کے بہکاوے میں آ جاتے ہیں لہذا میری لوگوں سے اپیل ہے کہ اپنے بچوں کے مسقتبل کے لئے سوچیں اور سوچ سمجھ کر اپنا فیصلہ لیں۔
 

شراب کی فروخت پر مینڈھر کے عوام برہم 

جاوید اقبال
 
مینڈھر//اسمبلی حلقہ مینڈھر ریاست میں واحد ایک ایسا اسمبلی حلقہ تھا جو شراب سے پاک تھا جہاں پر علمائے کرام کی مداخلت کے بعد شراب کی دکانوں کو بند کرنے کا حکم جاری ہوا تھا جس کے بعد انتظامیہ کی سختی کے بعد مینڈھر میں شراب بکنا بند ہو گئی تھی اورا س  کے بعد کئی جگہوں پر پولیس نے بھی ناکے لگا کر شراب پر مکمل پابندی عائدکر دی تھی ۔اس سلسلہ میں سب ڈویزن مینڈھر سے تعلق رکھنے والے کئی زی شعور لوگوں نے ضلع انتظامیہ کے ساتھ ساتھ مینڈھر انتظامیہ کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مینڈھر اسمبلی حلقہ کے اندر بے شمار شراب چوری چھپے فروخت ہو رہی ہے جس پر انتظامیہ کا کوئی کنٹرول نہیں ہے ان کا کہنا تھا کہ بے شمار گاڑیاں جو پونچھ اور راجوری مسافروں کو لے کر جاتی ہیں وہ واپسی پر شراب یا تو خود ڈرئیور لے کر آتے ہیں یا چوری شراب بیچنے والے شراب کی پیٹیاں لے کر آتے ہیں جو مینڈھر کے اندر کئی گنا زیادہ قیمتوں پر شراب فروخت ہو رہی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ شراب فروخت ہونے پر اگر پولیس ناکے لگائے اور سختی سے پیش آئے تو شراب بند ہو سکتی ہے کیونکہ پولیس کی لا پرواہی کی وجہ سے بے شمار شراب فروخت ہو رہی ہے کیونکہ کئی ایسی گاڑیاں ہیں جو صرف شراب لانے کیلئے ہی سب ڈویزن مینڈھر سے راجوری یا پونچھ جاتی ہیں اور کئی پیٹیاں شراب کی لے کر آتی ہیں اور سو روپے کی چیز پانچ سو روپے میں بک رہی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اگر شراب پر سختی سے پابندی نہ لگائی گئی تو نوجوان نسل خراب ہو جائے گی اور اس کا خمیازہ والدین کو بگھتنا پڑے گا ۔ان کا کہنا تھا کہ پولیس انتظامیہ اس پر سختی سے پیش آئے تاکہ شراب کا ناجائز طور پر کیا گیا دھندہ بند ہو جائے اور نوجوان نسل کو خراب ہونے سے بچایا جائے ۔ان کا کہنا تھا کہ مینڈھر کے اندر نشیلی ادویات کو بھی بند کروایا جائے تاکہ نوجوان نشیلی ادویات کا دھندہ نہ کریں۔ کیونکہ نشیلی ادویات سے کئی نوجوانوں کی موتیں ہو چکی ہیں۔اس سلسلہ میں مینڈھر اسمبلی حلقہ سے تعلق رکھنے والے زی شعور لوگوں نے پولیس کے اعلی افیسران سے اپیل کی ہے کہ مینڈھر کے اندر شراب کے ساتھ ساتھ نشیلی ادویات پر پابندی لگائی جائے اور خاص کر ناجائز طور پر فروخت ہو رہی شراب کو فوری طور بند کیا جائے تاکہ نوجوان نسل تباہی کی طرف نہ جائے۔
 
 

شیپ اینڈوول ورکرس ایسوسی ایشن راجوری کااجلاس 

مانگیں پوری کرنے کیلئے اعلیٰ حکام کاشکریہ اداکیا

طارق شال
 
تھنہ منڈی / گزشتہ روز راجوری میں شیپ اینڈ وول ورکرز ایسو سی ایشن کا ایک اجلاس منعقد ہوا ۔اس دوران اجلاس کی صدارت ایسو سی ایشن کے سینئر ایڈوائزر چندر پرکاش شرما نے کی جبکہ اس موقعہ پر ضلع صدر شیپ اینڈ وول ورکرز ایسو سی۔ایشن راجوری آصف اقبال میر بھی موجود تھے۔ ایسو سی۔ایشن کے عہدیداران نے پرنسیپل سکرٹری انیمل اینڈ  شیپ ہسبنڈری کا شکریہ ادا جنہوں نے آرڈر نمبر/2015/ 187  and 188/2015 کو واپس لیکر اس محکمہ کے ملازمین کا حوصلہ بڑھایا۔ انہوں نے اس موقعہ پر ڈائریکٹر شیپ ہسبنڈری جموں ڈاکٹر سنجیو کمار کابھی شکریہ ادا جنہوں نے محکمہ شیپ اینڈ وول کے ملازمین کو ٹائم۔بونڈ ترقی دیکر انکے جائز مطالبات پورے کئے۔ اسکے علاوہ عہدیدارن نے ڈسٹرکٹ شیپ ہسبنڈری آفیسر راجوری ڈاکٹر رمیش کمار منہاس کے کام۔کاج کی سراہنا کی جنکی بروقت کاروائی سے ان ملازمین کے مطالبات حل ہوئے۔ ایسو سی ایشن کے عہدیداران نے شیپ اینڈ وول کے صوبائی صدر  اشوک کمار  بڈیال کی کاوشوں کی سراہنا کی جن کی مسلسل محنت کی۔وجہ سے مسائل حل ہوئے اور امید ظاہرکی ہے ڈاکٹر سنجیو شرما آئندہ بھی ایسو سی۔ایشن کی رہنمائی جاری رکھیں گے تاکہ بقیا مسائیل حل کرنے میں آسانی ہوگی۔
 

شراب کی 21بوتلیں ضبط، سمگلرگرفتار

بختیار حسین
 
سرنکوٹ// سرنکوٹ پولیس نے گزشتہ روز غیر قانونی طور پر شراب فروشی کی کوشش کو ناکام بناتے ہوئے ایک شخص کو شراب کی 21بوتلوں سمیت گرفتار کر لیا۔تفصیلات کے مطابق سرنکوٹ پولیس نے ایس ایچ او سرنکوٹ کی سربراہی میں ایک مشتبہ مقام پر چھاپہ مار کر گنیش دتا ولد اشوک دتا ساکن درآبہ کے قبضہ سے شراب کی 21 بوتلیں ضبط کر لیں اور مذکورہ شخص کو اپنی تحویل میں لیا گیا۔اس معاملہ میں پولیس ذرائع سے ملی جانکاری کے مطابق مذکورہ شخص  شراب کی 21بوتلوں کو فروخت کرنے کی غرض لے جا رہا تھا اور پولیس کو ملی خفیہ جانکاری کے مطابق پولیس نے غیر قانونی طور پر شراب فروشی کی کوشش کو ناکام بنایا اور مذکورہ شخص کو گرفتار کر لیا گیا۔اس ضمن میں مذکورہ شخص کے خلاف کیس درج کر لیا گیا ہے اور مزید تحقیات کی جارہی ہے۔
 

رشیدقریشی کالال حسین کے انتقال پراظہارتعزیت 

جاوید اقبال
 
مینڈھر//سابقہ ممبر قانو ن ساز کو نسل ایڈوکیٹ محمد رشید قریشی نے لال حسین عرف حا جی پو لا کے انتقال پر رنج و غم کا اظہار کیا گیا۔ انہوں نے مرحوم کی روح کے ابدی سکون کی دْعا کرتے ہوئے سوگوار کنبہ کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ انہو ں نے کہا کہ مر حو م نے پو ری زندگی سماجی خدمات میں گزری،بلند اخلاق اور پختہ ارادہ کی شخصیت کے مالک تھے۔ انہو ں نے کہا کہ مر حوم نے ساری زندگی اصولوں اور پختہ سوچ کی راہ پر گامزن رہے۔حاجی لعل حسین نے زندگی بھر کبھی اصولوں پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا۔ انہو ں نے اللہ تعالی سے دعا کی  کہ مر حو م کو جنت الفردوس میں اعلی مقام عطا فر مائے ۔ اس دوران لال حسین عرف حا جی پو لا کی وفات پر متعدد یاسی سماجی لو گو ں جن میں ما سٹر لطیف قریشی، محمد اعظم فا نی، چوہد ری محمد ر زاق، نمبردار محمد فرید، ما سٹر نعیم خان، چوہد ری حسن دین ، چوہد ری محمد اسلم، حولدار محمد اسلم ، محمد نیا ز، صدبیدار راج  محمد ، حا جی محمد اکرم ، سردار مو ہن سنگھ ، محمد یونس بکروال اور محمد یو سف قریشی  نے پورے خاندان کے ساتھ تعزیت کا اظہار کر کنبے کے ساتھ ظہار یکجہتی کی ہے۔