مائسمہ میں جھڑپوں کے بعد افراتفری

سرینگر //مائسمہ علاقے میں اُس وقت نوجوانوں اور فورسز کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیںاور پولیس کو ٹیر گیس شلینگ کرنی پڑی جب قومی تحقیقاتی ایجنسی(این آئی اے) منگل کی صبح لبریشن فرنٹ چیئر مین محمد یاسین ملک کی رہائش گاہ واقع، مائسمہ سرینگر پر چھاپہ ماراکارروائی کے بعد واپس آرہی تھی ۔عینی شاہدین کے مطابق صبح 7بجے این آئی اے ٹیم نے یاسین ملک کی رہائش گاہ پر تلاشی کارروائی شروع کی اور یہ کام کرنے کے بعد جیسے ہی وہ باہر آئے تومشتعل نوجوانوں نے اسلام اور آزادی کے حق میں نعرہ بازی کرتے ہوئے فورسز پر شدید پتھرائو کیاجس کے بعد وہاں افرتفری پھیل گئی ،جوابی کارروائی میں پولیس اور سی آر پی ایف نے بھی مشتعل نوجوانوں پر ٹیر گیس شیلنگ کی جس کی وجہ سے آس پاس کے علاقوں میںافرا تفری پھیل گئی۔جھڑپوں کے بعد مائسمہ اور اس کے آس پاس کے بازار بند ہو گئے اورپولیس کی ٹیر گیس شیلنگ کے بعد بھی نوجوان نعرہ بازی کرتے رہے۔ اس دوران وہاں ٹریفک میں بھی خلل پڑا ۔شینگ کے بعد نوجوان منتشر ہوئے اور پولیس نے آئی آئی اے ٹیم کو باحفاظت اپنے ساتھ لیا ۔جھڑپوں کے بعد وہاں دکانیں اوردیگر کاروباری ادارے بند رہے اور علاقے میں پولیس اور فورسز کی بھاری نفری کو تعینات کیا گیا ۔لبریشن فرنٹ کے ایک ترجمان کے مطابق این آئی اے کی ٹیم پولیس اور دیگر فورسز کے ہمراہ صبح ساڑھے سات بجے مائسمہ پہنچی اور ملک کی رہائش گاہ کی تلاشی لی۔چھاپے کے وقت پورے علاقے کو محاصرے میں لیا گیا تھا اور کسی کو بھی وہاں سے گذرنے کی اجازت نہیں دی جارہی تھی۔