لداخ جانے اور واپس آنے والے ملازمین

سرینگر/بلال فرقانی/ حکومت نے ا نتظامی افسران کو ہدایت دی ہے کہ وہ ڈیپوٹیشن پر لداخ جانے والے ملازمین کو فوری طور پر موجودہ مقامات سے فارغ کرکے لداخ میں عمومی انتظامی محکمہ میں رپورٹ کرنے کے عمل کو یقینی بنائیں جبکہ لداخ سے واپس آنے والے ملازمین یکا یک اپنے مقامات کو نہ چھوڑے بلکہ طریقہ کار پر عمل کرے۔ سرکیولر میں کہا گیا’’ یہ بات سامنے آئی ہے کہ مرکز کے زیر انتظام علاقے لداخ سے واپس بھیجے جانے والے ملازمین اپنے مقامات کو مناسب طریقے سے فارغ کیے بغیر اور ان کے متبادل آنے سے پہلے،چھوڑ رہے ہیں جس کی وجہ سے مرکزی زیر انتظام خطے میں انتظامی مشکلات پیدا ہو رہی ہیں۔ سرکیولر میں تمام انتظامی سیکریٹریوں اور محکموں کے سربراہان کو ہدایت دی گئی ہے ’’جن ملازمین کو مرکزی زیر انتظام لداخ میں تعینات کیا جا رہا ہے، ان کو ان کے مقامات،دفاتر سے فوری طور پر فارغ کیا جائے اور مزید تقرری کے لیے لداخ جنرل ایڈمنسٹریشن ڈیپارٹمنٹ میں رپورٹ کریں ‘‘۔ کمشنر سیکریٹری عمومی انتظامی محکمہ کی جانب سے جاری سرکیولر میں مزید کہا گیا ’’ مرکزی زیر انتظام علاقہ لداخ سے واپس بھیجے جانے والے ملازمین کو متعلقہ حکام کی طرف سے فارغ کیے جانے کے مناسب طریقہ کار پر عمل کرنا ہوگا اور جب تک ان کے متبادل چارج سنبھال نہیں لیں گے تب تک انہیں اپنے عہدوں کو نہیں چھوڑنا چاہیے۔‘‘ سرکیولر میں کہا گیا کہ جموں و کشمیر تنظیم نو قانون مجریہ2019 کی دفعات کے لحاظ سے، افرادی قوت کی تقسیم کو 2021 کے گورنمنٹ آرڈر نمبر 1212-JK(GAD)محررہ15نومبر.2021کے ذریعے حتمی شکل دی گئی۔سرکیولر میںکہا گیا کہ اس کے علاوہ مرکز کے زیر انتظام جموں و کشمیر کے ملازمین جو لداخ میں مستقل طور پر قیام کر رہے ہیں کو واپس بھیجا جا رہا ہے اور ساتھ ہی لداخ میں مناسب متبادل تعینات کئے جا رہے ہیں۔