قومی لوک عدالتوں کا انعقاد | 12884 کیس حل

سرینگر// ریاست بھر کی تمام عدالتوں بشمول جموں وکشمیر ہائی کورٹ کی دونوں ونگوں میں قومی لوک عدالت کا انعقاد کیا گیا۔ یہ لوک عدالتیںجموں وکشمیر ہائی کورٹ کی چیف جسٹس، جسٹس گیتا مِتل جو جے اینڈ کے سٹیٹ لیگل سروسز اتھارٹی کی پیٹرن اِنچیف بھی ہیں، کی سربراہی میں منعقد کی گئیں۔ جے اینڈ کے ہائی کورٹ کے جج اور جے کے ایس ایل ایس اے کے ایگزیکٹو چیئرمین جسٹس راجیش بندل کی رہنمائی اورنیشنل لیگل سروسز اتھارٹی کی سرپرستی میں قومی لوک عدالت کا انعقاد کیا گیا۔جے کے ایس ایل ایس اے کے ممبر سیکریٹری محمد اکرم چوہدری نے تمام عدالتوں سے موصول شدہ اطلاعات کی بنیاد پر کہا کہ ریاست کے تینوں صوبوں جموں، کشمیر اور لداخ کی عدالتوں میں لوک عدالت منعقد کی گئی۔ان لوک عدالتوں میں19686 معاملات کو ریاست کی مختلف عدالتوں کے133 بنچوں میں شنوائی کے لئے اُٹھایا گیا جن میں سے12884 معاملات نپٹائے گئے اور540422009 روپے کی رقم بطور معاوضہ/ سول کریمنل سیٹلمنٹ، لیبر تنازعات، بجلی اور پانی کی بلوں کے معاملات، حصول اراضی، گھریلو معاملات، چیک ڈِس آنر اور بنک ریکوری معاملات میں وصول کئے گئے۔گاندربل سے ہمارے نمائندے ارشاد احمد  نے اطلاع دی ہے کہ گاندربل میں لیگل سروس اتھارٹی  کے زیر اہتمام قومی سطح کی لوک عدالت پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج گاندربل محمد یوسف وانی کی صدارت میں منعقد ہوئی جولیگل سروس اتھارٹی کے چیئرمین بھی ہیں۔اس موقع پر مختلف نوعیت کے313 مقدمات عدالت میں پیش کئے گئے جن میں کرمنل،بنک،بجلی،ٹریفک چالان شامل ہیںجن میں سے 146 مقدمات دونوں فریقین کے درمیان افہام و تفہیم سے حل کئے گئے جبکہ تصفیہ کے تحت 5لاکھ 56ہزار روپے939 روپے وصول کئے گئے۔اس موقع پر گاندربل بارایسوسی ایشن کے وکلاء بھی موجود تھے۔