قومی شاہراہ مجموعی طورتیسرے روز بھی بند

 محمد تسکین

بانہال // بارشوں اور برفباری کیوجہ سے ایک درجن سے زائد مقامات پر جموں سرینگر قومی شاہراہ مجموعی طور پر ٹریفک کی آمدورفت کیلئے بدھ تیسرے روز بھی ٹریفک کیلئے بند رہی۔ تاہم دوپہر بعد فورلین شاہراہ کو تعمیراتی کمپنیوںنے جزوی طور بحال کیا۔اس دوران ناشری ٹنل اور بانہال کے درمیان درماندہ ٹریفک کو آگے بڑھنے کی اجازت دی گئی ۔ اس دوران جزوی بحالی کے بعد شام تک شاہراہ کے کئی مقامات پر رک رک کر پتھر گر رہے تھے۔ شیر بی بی کے مقام پر کشتواڑی پتھر کے قریب پسی گر آئی اور شام چھ بجے تک وہاں ٹریفک بند تھا۔شاہراہ کا جائزہ لینے کیلئے ڈپٹی کمشنر رام بن نے بدھ کو شاہراہ کا درہ کیا۔ شاہراہ پر پیر کی صبح سے ناشری اور بانہال کے درمیان ڈھلواس ، مہاڑ ، کیلا موڑ ، بیٹری چشمہ ، شیر بی بی ، شالگڑی اور طبیلہ سمیت ایک درجن سے زائد مقامات پر پسیاں اور پتھر گر آئے تھے، جسکی وجہ سے شاہراہ بند ہوگئی تھی۔ اس دوران رام بن اور بانہال سیکٹر کے علاوہ ادہمپور اور قاضی گنڈ میں سینکڑوں گاڑیاں درماندہ ہو کر رہ گئیں۔ادھر ضلع شوپیان کو صوبہ جموں کے راجوری اور پونچھ اضلاع کے ساتھ جوڑنے والے تاریخی مغل روڈ پر گذشتہ کئی روز سے ٹریفک بند ہے جبکہ سری نگر- لیہہ اور بانڈی پورہ گریز شاہراہیں پر بھی برف جمع ہونے کی وجہ سے ٹریفک کی نقل و حمل کیلئے بند ہے۔علاوہ ازیں بھدر واہ – چمبا روڈ اور کشتواڑ – سنتھن- اننت ناگ روڈ بھی ٹریفک کی نقل و حمل کے لئے بند ہیں۔