فضائیہ کے5اہلکاروں کی ہلاکت

جموں//1990میں سری نگرکے مضافات راولپورہ کے نزدیک ایک جنگجوئیانہ حملے میں فضائیہ کے 5اہلکاروں کی ہلاکت کے کیس کی سنیچرکے روزٹاڈاعدالت جموں میں پھرسماعت ہوئی۔  جے کے این ایس کے مطابق معلوم ہواکہ عدالت میں اس کیس کی سماعت کے دوران اہم ملزم محمدیاسین ملک موجودنہیں تھے تاہم ویڈیوکانفرنسنگ کے ذریعے اُنھیں تہاڑجیل نئی دہلی سے سماعت میں شامل رکھاگیا۔میڈیارپورٹس کے مطابق سنیچرکوٹاڈاعدالت جموں میں ائرفورس اہلکاروں کی ہلاکت سے جڑے کیس کی سماعت کے دوران ممنوعہ علیحدگی پسندتنظیم لبریشن فرنٹ کے محبوس چیئرمین محمدیاسین ملک کیخلاف چارج شیٹ یعنی فردجرم عائدکیاگیا۔خیال رہے اس تیس سالہ پرانے کیس کی ٹاڈاعدالت جموں میں گزشتہ کئی برسوں سے سماعت ہورہی ہے تاہم اب اس کیس میں ملزمان کیخلاف چارج شیٹ داخل کیاگیاہے ۔رپورٹس کے مطابق اب اس کیس کی اگلی سماعت رواں ماہ کی16تاریخ یعنی اگلی سوموارکوٹاڈاکورٹ جموں میں ہوگی ۔