فارغ کئے گئے احتجاجی کنٹریکچول لیکچرروں کیساتھ نیشنل کانفرنس کا اظہارِ یکجہتی

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے اعلیٰ سطحی وفد نے کل سرینگر کی پرتاپ پارک میں احتجاج پر بیٹھے محکمہ تعلیم سے فارغ کئے گئے کنٹریکچول لیکچرروں کیساتھ اظہارِ یکجہتی کیا اور گورنر انتظامیہ پر زور دیا کہ ان بے روزگار تعلیم یافتہ نوجوانوں کیساتھ انصاف کیا جائے اور ان کی معیاد میں توسیع کی جائے۔ وفد میں پارٹی کے صوبائی صدر ناصر اسلم وانی، سینئر لیڈر و ضلع صدر سرینگر پیر آفاق احمد اور صوبائی یوتھ صدر سلمان علی ساگر شامل تھے۔ اس موقعے پر ناصر اسلم وانی نے کہا کہ یہ نوجوانوں کی محکمہ تعلیم میں بحیثیت کنٹریکچول اپنی خدمات انجام دے رہے تھے لیکن 10مئی کو انہیں مکمل طور پر فارغ کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس گورنر کیساتھ یہ معاملہ اُٹھائے گی اور اُن پر زور دے گی کہ فی الحال ان کی خدمات کو جاری رکھا جائے کیونکہ محکمہ تعلیم میں ان کی ضرورت بھی ہے۔انہوں نے کہا کہ تعمیر و ترقی اور بنیادی سہولیات کا بھی فقدان ہے۔ شہر سرینگر کی سڑکیں کھنڈرات میں تبدیل ہوگئیں اور یہی حال دیگر اضلاع کی سڑکوں کا بھی ہے۔سڑکوں کو ٹھیک کرنے اور دیگر تعمیراتی کاموں کیلئے ہمارے پاس 4ماہ 5مہینے ہی ہوتے ہیں ۔تعمیراتی کاموں کا سیزن آدھے سے زیادہ ختم ہوگیا لیکن کام شروع نہیں ہوررہے ہیں، وقت ضائع ہورہا ہے ، جس کی وجہ سے لوگوں کے مشکلات میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔وانی نے کہا کہ یہ سارا درست کرنے کی ضرورت ہے، اس لئے ہم چاہتے ہیں کہ یہاں الیکشن ہوں، لوگ اپنے نمائندے چنے اور ایک عوامی منتخبہ حکومت یہاں کے حالات کو استوار کرنے کے ساتھ ساتھ تعمیر و ترقی کو بھی آگے لے جائے۔