عید الفطر۔یومِ شُکرانہ

ناصر منصور
 

عیدین اللہ تعالیٰ کی طرف سے بنی نوع انسان کو اس واسطے دی گئي ہیں کہ بندہ اس دن اللہ تعالیٰ کی نعمتوں پر اللہ کا شکر بجا لائیں ۔ شکر کی تعریف یہ ہے کہ کسی کا احسان و نعمت کی وجہ سے زبان و دل یا اعضاء کے ساتھ اس کی تعظیم کرنا ۔ خوشحالی میں شکر کرنے والا شاکر ہے جب کہ مصیبت میں شکر کرنے والا شکور ہے ۔ سورۃ الابراہیم میں یوں ہے ۔ اگر احسان مانو گے تو میں تمہیں اور دوں گا اور اگر نا شکری کرو تو میرا عذاب سخت ہے ۔( آیت نمبر 7۔ )عام طور پر عیدین کے حوالے سے یہ تاثر دیا جاتا ہے کہ عید خالص خوشی کا دن ہے، عید کا نام خوشی کا بتایا جاتا ہے جو درست نہيں ہے ۔ اصل میں عید کا معنیٰ ہے جو لوٹ لوٹ کر آتی ہے ۔ آج عید آئی پھر سال بر کے بعد لوٹ کر آئی گی، عید کہلاتی ہے 

یہود و نصاریٰ اور مشرکین اپنی اپنی عید کے موقع پر کھیل کود ،ناٹک و شماشہ اور شعوبدہ بازی کیا کرتے تھے جیسے ہندوستان کے ہندو لوگ اچھلتے کودتے ہیں اور طوفانی بدتمیزیاں کرتے ہیں۔ اللہ تعالی نےان کے مقابلہ میں مسلمانوں کو دو عیدین دے دیں۔ ایک عید الفطر اور ایک عید الاضحیٰ ۔ عیدین میں دو رکعت کی نماز اللہ تعالی کا شکر کے لئے خاص ہے کہ اس نے ہمیں ہزارہاں نعمتوں سے نواز کر خیر دارین عطا کیا ۔یوم افطار جس کو عید الفطر کہا جاتا ہے یہ سجدہ شکرہے کہ اے اللہ! تو نے ہی ہمیں توفيق فرمایا اور اس لائق سمجھا کہ ہمیں روزے نصیب فرمائی ۔ آدمی جب اللہ کی دی ہوئی چیز پر شکر کرتا ہے تو اللہ تعالیٰ اس کے بعد اور زیادہ نعمتیں عطا کرتا ہے۔ حضرت معاز بن جبل ؓ روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے مجھے نصیحت کی اور فرمایا: یہ دعا جو میں آپ کو بتاوں، اسے کبھی بھولنا نہيں ۔ اللہھم اعنّی علیٰ ذکرک و شکرک و حُسنِ عِبادتِکَ ۔۔

اے ہمارے پرورِ دگار مجھے توفيق دے اپنی ذکر خیر کی مجھے توفیق دے ،اپنے شکر گزاری کرنے کی ۔ عیدین کا اطلاق قطعی طور خوشی پر نہيں ہوتا بلکہ یہ شکر کی خوشی ہے نہ کہ صرف خوشی خوشی۔ عید الفطر دراصل بہت سی کلمہ تشکر کا مجموعہ ہے، ایک رمضان المبارک کے روزوں کا شکر، دوسرا قیام شب میں رمضان کا شکر، تیسرا نزول قرآن ،چوتھا لیلتہ القدر اور پانچواںاللہ تعالی کی طرف سے روزہ داروں کے لئے رحمت و بخشش اور عذاب جہنم سے آزادی کا شکر، پھر ان تمام کلمہ تشکر کا اظہار صدقہ و خیرات جیسے صدقہ فطر کہا جاتا ہے، کے ذریعے کرنے کا حکم ہے تاکہ عبادت کے ساتھ انفاق و خیرات کا عمل بھی شریک ہوجائے ۔ یہی وہ وجوہات ہیں جن کی بناء پر اسے مومنوں کے لئے شکر کی خوشی کا دن قرار دیا گیا ۔

 (اومپورہ ہاوسنگ کالونی ) رابطہ۔9906736886

[email protected]>