عوامی مجلس عمل کے متعدد ارکان اوربہی خواہ فوت

سرینگر//مجلس عوامی عمل کے سربراہ میرواعظ عمر فاروق ،جنہیں ریاستی حکمرانوںنے گزشتہ ایک ہفتے سے ایک بار پھر نگین میں رہائش گاہ میں خانہ نظر بند رکھ کر ان کی جملہ پُر امن تنظیمی ،دینی ،ملی ،سماجی اور سیاسی سرگرمیوں پر پابندی عائد کررکھی ہے ،نے تنظیم اور تحریک سے جڑے متعدد سرکردہ ارکان اور حامیوں جن میں حکیم مسعود باغوان پورہ لال بازار کی بزرگ والدہ محترمہ، مرحوم معراج الدین بزاز سکونت نوشہرہ جن کے ایک برادر غلام رسول بزاز جسے بانی تنظیم میرواعظ محمد فاروق کے جلوس جنازہ میں1990 میںبھارتی فورسز نے اندھا دھند فائرنگ کرکے 70 افراد کے ساتھ مارا تھا،  عبدالقیوم زرو سیکریٹری عوامی مجلس عمل حلقہ نوہٹہ کے چچا مرحوم ولی محمد زرو ،مرحوم عبدالستار میر سابق صدر حلقہ سید علی اکبر فتح کدل کی اہلیہ ،غلام قادر شیخ (گاشہ) سکونت مہاراج گنج کی ہمشیر کی وفات حسرت آیات پر رنج وغم کا اظہار کرتے ہوئے حکیم خاندان، بزاز خاندان، زرو خاندان، میر خاندان اور شیخ خاندان کے ساتھ دلی تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے اور اللہ تبارک و تعالیٰ سے جملہ مرحومین کی مغفرت اور جنت نشینی کیلئے خصوصی دعا کی ہے ۔ اس دوران میرواعظ کی ہدایت پر تنظیم کے متعدد وفود جن میں غلام قادر بیگ، مولوی محمد یاسین شاہ (موذن مرکزی جامع مسجد سرینگر)، مشتاق احمد صوفی ، محمد صدیق ہزار اور محمد یوسف بٹ وغیرہ شامل ہیں ،نے مذکورہ مقامات اور علاقوں میں جاکر غمزدہ خاندانوں کے ساتھ تعزیت پرسی کی اور مرحومین کو خراج عقیدت ادا کیا۔اس موقعہ پر وفود نے میرواعظ اور تنظیمی قیادت کی جانب سے غمزدہ کنبوں تک تعزیتی پیغام پہنچایا اور مرحومین کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ پڑھی۔