طوفانی آندھی اور تیزہوائوں کی قہر سامانیاں خطہ پیر پنچال میں ہونے والے نقصان کا تخمینہ لگا کر معاوضہ کا مطالبہ

 عظمیٰ یاسمین

تھنہ منڈی// محکمہ موسمیات کی پیشگوئی کے عین مطابق اضلاع راجوری پونچھ کے کئی علاقوں میں طوفانی ہواؤں اور آندھی چلنے سے بھاری نقصان ہوا ہے۔ اس کے علاوہ متعدد علاقوں میں ژالہ باری بھی ہوئی ہے جس سے فصلوں اور پھلوں کا نقصان بھی ہوا ہے۔ مقامی لوگوں نے بتایا کہ منگل کی صبح ہونے والی شدید بارش کے دوران شدید آندھی اور تیز رفتار ہواؤں نے طوفان کی شکل اختیار کر لی جس سے اس علاقے میں متعدد جگہوں پر مکانوں کی چھتیں اور گاؤ خانے ہوا اپنے ساتھ اڑا کر لے گئی۔ طوفانی بارشوں اور تیز ہواوں کی وجہ سے کئی علاقوں میں بجلی کا نظام درہم برہم ہو کر رہ گیا، بجلی کے کھمبے گر آنے اور ترسیلی لائنیں ٹوٹ جانے کی وجہ سے کئی علاقے گھپ اندھیرے میں ڈوب گئے تاہم سب ڈویژن تھنہ منڈی میں بجلی کے فعال جونیئر انجینئر وقار ڈار اور لائن ایکٹر شبیر احمد خان کی مجموعی سربراہی میں پوری ٹیم حرکت میں آئی اور سخت محنت اور جد و جہد کے بعد بجلی کی فراہمی کو یقینی بنا دیا گیا۔ جس کے لیے عوام نے متعلقہ محکمہ کا شکریہ ادا کیا۔ وہیں تھنہ منڈی کے زیریں علاقوں میں موسلادھار بارش اور بالائی علاقوں میں برفباری کا سلسلہ جاری رہا بارش اور برفباری کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہو گیا ہے۔ اس دوران علاقہ کی سڑکیں ٹریفک کے لیے بحال ہیں تاہم سیاحتی مقام دہرہ کی گلی کو بفلیاز سے جوڑنے والی مغل شاہراہ برف اور دھرم راج تعمیراتی ایجنسی کی عدم توجہی اور غیر ذمہ دارانہ رویے کے باعث ٹریفک کے لیے فی الحال بند ہے جس کی وجہ سے یہاں کے عوام اور دوسرے مسافروں کو مشکلات پیش أ رہی ہیں۔ عوام نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ دھرم راج کنسٹرکشن کمپنی کو ہدایت جاری کرے کہ وہ اس سڑک کی تعمیر میں سرعت لائے تاکہ لوگوں کو پریشانیوں کا سامنا نہ کرنا پڑے بصورت دیگر انہوں نے مطالبہ کیا کہ اس ایجنسی کو بلیک لسٹ کیا جائے۔ لوگوں نے تحصیل انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ پورے علاقے میں ہونے والے نقصان کا تخمینہ لگا کر متاثرین کو معقول معاوضہ فراہم کرے۔