طالب علم کی پراسرار گمشدگی پر احتجاج جاری

 
سرینگر//2ہفتے قبل پُراسرار طور لاپتہ ہوئے پوسٹ گریجویٹ طالب علم کی بازیابی کے حق میں کشمیریونیورسٹی میں جمعرات کومسلسل چوتھے روز طلبہ کی ایک بڑی تعداد نے احتجاجی مظاہرے کئے۔اس دورا ن کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر خورشید اقبال اندرابی نے ریاستی حکام پر زور دیا ہے کہ وہ یونیورسٹی کے شعبہ ارتھ سائنس میں زیرتعلیم طالب علم کو بازیاب کرنے کی کوششوں میں سرعت لائیں۔جمعرات کی صبح کشمیر یونیورسٹی کے شعبہ ارتھ سائنس میںزیر تعلیم طلبہ کی ایک بڑی تعداد متعلقہ ڈیپارٹمنٹ کے باہرایک بارپھر جمع ہوگئی اور اپنے ساتھی سمیر احمد ڈار ولد محمد سبحان ڈار ساکنہ گنڈی باغ کاکہ پورہ پلوامہ کی بازیابی کے حق میںاحتجاج کرنے لگی۔خیال رہے کہ کشمیریونیورسٹی کے طلبہ گزشتہ 4روز سے مسلسل اپنے ساتھی کی بازیابی کے حق میںصدائے احتجاج بلند کررہے ہیں۔احتجاجی طلبہ کا کہنا تھا کہ سمیر احمدڈار 2ہفتے قبل لاپتہ ہوگیا اور اب تک اس کا کوئی اپتہ پتہ نہیںچل سکا ہے۔انہوں نے کہا’’سمیر کے گھروالوں نے پہلے ہی پولیس اسٹیشن میں گمشدگی کی رپورٹ درج کرائی ہے ۔تاہم کوئی اس کی پراُسرار گمشدگی کے بارے میںکچھ نہیں کہہ رہا ہے‘‘۔ادھر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر خورشید اقبال اندرابی نے بھی ریاستی حکام پر زور دیا ہے کہ وہ لاپتہ طالب علم کو بازیاب کرنے کی کوششوں میں سرعت لائیں۔
 

لال بازار سے 15سالہ لڑکا لاپتہ

  سرینگر//لال بازار پولیس ا سٹیشن کو عبدل مجید گنائی ساکن کلاروس کپوارہ حال لال بازار نے اپنے  15سال کے بیٹے منیر احمد گنائی کے بارے میں لاپتہ ہونے کی اطلاع دی جس پر پولیس ا سٹیشن لال بازار میںگمشدہ رپورٹ اندراج کرکے مذکورہ  لڑکے کی تلاش شروع کی ۔پولیس نے کہا ہے کہ اگر کسی شخص کو  مذکورہ لڑکے کے بارے میںکوئی علمیت ہو تو بذیل نمبرات  9596770591  9596770871,     1.01942421946    ,9596222550,959622255 یا پھر 100  پر رابطہ کرے ۔