سوئیڈن میں قرآن کی بے حرمتی پر احتجاج | مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں

نیوز ڈیسک
اسٹاک ہوم//یو این آئی// سویڈن میں ایک انتہائی دائیں بازو کے مخالف تارکین وطن گروپ کی طرف سے مسلمانوں کی مقدس کتاب قرآن کو نذر آتش کرنے کے بعد فسادات پھوٹ پڑے ۔ پولیس نے فسادیوں کو خبردار کرنے کے لیے فائرنگ کی، جس سے تین افراد زخمی ہوئے ۔مقامی میڈیا نے بتایا کہ تقریباً 150 لوگوں کے ہجوم نے پولیس اہلکاروں پر پتھراؤ کیا اور کئی گاڑیوں کو آگ لگا دی۔ تقریباً 17 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ ڈنمارک میں پیدا ہونے والے سویڈش انتہا پسند راسموس پالوڈن جس نے ا سٹرام کرس یا ہارڈ لائن تحریک کی قیادت کی، کہا کہ اس نے اسلام کے مقدس ترین صحیفے کو جلا دیا ہے اور وہ دوبارہ ایسا کریں گے ۔دوسری طرف سے مظاہرین بھی وہاں جمع ہو گئے جب لیڈر نے نورکپنگ میں ایک اور ریلی منعقد کرنے کی دھمکی دی تھی۔مقامی پولیس نے کہا کہ انہوں نے حملے کی زد میں آنے کے بعد انتباہی علامت کے طور پر فائرنگ کی اور فسادیوں نے تین افراد کو نشانہ بنایا۔