سری لنکن وزیر اعظم راج پکشے مظاہرین سے مذاکرات کیلئے تیار

کولمبو// سری لنکا کے وزیر اعظم مہندا راج پکشے نے بدھ کو ملک میں حکومت مخالف مظاہروں کے درمیان بدھ کے روز مظاہرین کے ساتھ غیر معمولی اقتصادی بحران پر بات کرنے کے لیے تیار ہو گئے ، جس سے پورا ملک دوچار ہے ۔ مقامی اخبار کولمبو پیج نے راج پکشے کے حوالے سے کہا کہ وہ (وزیراعظم) کولمبو کے گال فیس گرین ریزورٹ میں جمع ہونے والے مظاہرین سے بات چیت کے لیے تیار ہیں تاکہ ملک میں بحران کا فوری حل نکالا جا سکے ۔غور طلب ہے کہ ملک کے ہزاروں شہری بالخصوص نوجوان کئی دنوں سے حکومت کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔ وہ ملک میں بحران کے لیے حکومت کو ذمہ دار ٹھہرا رہے ہیں جس کے بعد وزیر اعظم نے انھیں سنگھل اور تمل نئے سال کے موقع پر بات چیت کا دعوت نامہ بھیجا ہے ۔مظاہرین صدر گوٹابایا راج پکشے اور ان کے بھائی اور وزیر اعظم مہندا راج پکشے کے استعفیٰ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔مقامی اخبار نے کہا کہ گال فیس گرین اور صدر سیکرٹریٹ میں جاری احتجاج آج پانچویں روز بھی جاری رہا۔مظاہرین نے صدر سیکرٹریٹ کے قریب احتجاجی مقام کو ‘گوٹا گو گاما’ (گاؤں جاؤ) کا نام رکھا ہے ۔