ریڈی میڈ لیڈراورجماعتیں آر ایس ایس کے آلہ کار | ریاست کو اندر سے کھوکھلا کرنے کیلئے باضابطہ مشینری کار فرماء: ساگر

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے کہاہے کہ ہماری صفوں میں نفاق ڈال کر ہماری آواز کو بے وزن کرنے کیلئے باضابطہ طور پر ایک مشینری کام کررہی ہے اور ہماری ریاست کو اندر سے کھوکھلا کرنے کیلئے ایک میکانزم کے تحت وادی میں نت نئی سیاسی جماعتیں اور اتحادوں کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے اور ان ریڈی میڈ لیڈران کے منہ میں دلکش اور فریبی نعرے ڈالے جارہے ہیں۔علی محمد ساگر نے پارٹی ہیڈکوارٹر پر دیوسر کنڈی اور شمالی کشمیر سے وابستہ کارکنوں اور عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقعے پر سینئر پارٹی لیڈران چودھری محمد رمضان، جسٹس توقیر احمد شاہ، محمد شفیع شاہ، پیر آفاق احمد ، ایڈوکیٹ شوکت میر اور عمران نبی ڈار بھی موجو دتھے۔ علی محمد ساگر نے کہا کہ اتحاد و اتفاق میں ہی کشمیر کا مستقبل محفوظ ہے اور ہمیں ہر اُس سازش اور منصوبہ کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہے کا مقصد ہماری آواز کو تقسیم اور بے وزن کرنا ہو۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی کے بے نقاب ہونے کے بعد متبادل جماعتوں اور چہروں کو آگے لاکر کشمیریوں کو گمراہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ 2014میں پی ڈی پی کو منڈیٹ دیکر جو غلطی ہوئی ایسا دوبارہ نہیں ہونا چاہئے اور عوام کو ہر اُس جماعت اور چہرے کو یکسر مسترد کرنا چاہئے جن کا مقصد آنے والے انتخابات میں وہی رول نبھانا ہے جو پی ڈی پی نے 2014کے انتخابات کے بعد نبھایا۔ اُن کا کہنا تھا کہ ہمارے دشمنوں کا ایجنڈا کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں، یہ لوگ جموں وکشمیر کی خصوصی پوزیشن کیساتھ ساتھ ریاستی کی علاقائی سالمیت کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔ وقت کی اہم ضرورت ہم اپنی صفوں کو مضبوط کریں اور ریاست کے وسیع تر مفاد کیلئے متحدہ ہوجائیں اور چیلنجوں کا ڈٹ کر مقابلہ کریں۔