روحانیت اور سماجی انصاف

سرینگر//کشمیریونیورسٹی کے شاہ ہمدان انسٹی چیوٹ آف اسلامک اسٹیڈیزکے اہتمام سے یہاں دوروزہ بین الاقوامی سمینار ’’روحانیت اور اسلام میںسماجی انصاف،چیلنجزانڈپراسپیکٹس ‘موضوع پر منعقد ہوا۔سمینار کی افتتاحی تقریب پر خطاب کرتے ہوئے کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسرطلعت احمد نے کہا کہ سمینار کاموضوع کافی اہم ہے اور ہماری روزمرہ زندگی میں اس کی افادیت کو مذہبی تقابل کے منظر سے دیکھنا ہوگا۔انہوں نے یونیورسٹی کے تعلیمی معیار کوبلند کرنے کیلئے ایسے ضروری سمینار وں کااہتمام کرنے کی تلقین کی ۔اس موقعہ پر انسٹی چیوٹ کے سالانہ  جریدہ’ ان سائٹ اسلامیکس‘ اورڈاکٹر توفیق احمد پرے کی تصنیف ’ایکسپلورنگ قران‘کابھی اجراء کیاگیا۔ سمینار کے افتتاحی دن ڈین اکیڈمک افیئرزپروفیسرمصدق امین صحاف نے اپنے صدارتی خطبے میں کہا کہ روحانیت اور سماجی انصاف کے درمیان گہرارشتہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ جتنا ایک آدمی روحانیت پرتوجہ مرکوزکرتا ہے اتنا ہی وہ سماجی رشتوں میں انصاف کرتاہے اور بہترین طور نبھاتاہے۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ نئی دہلی کے سابق صدرشعبہ اسلامک اسٹیڈیز پروفیسر اشتیاق دانش نے کلیدی خطبہ میں کہا کہ روحانیت کو تنگ نظر سے نہیں دیکھنا چاہیے بلکہ یہ فرد کی انفرادیت کو اسلام کے آفاقی اصولوں پر استوار کرناہے۔کشمیریونیورسٹی کے رجسٹرار پروفیسرنثاراحمدمیرجو اس موقعہ پرمہمان ذی وقار کے طور موجودتھے،نے اسلامی روحانیت اور روحانی شخصیات کے رول کو اُجاگر کیا۔