راجیوگاندھی قتل کا مجرم 32سال بعد ضمانت پر رہا

نئی دہلی//سپریم کورٹ نے 1991 میں سابق وزیراعظم راجیو گاندھی کے قتل کے الزام میں عمر قید کی سزا کاٹ رہے اے جی پیراریولن کو بدھ کے روز ضمانت دے دی۔ جسٹس ایل ناگیشور راؤ اور جسٹس بی آر گَوئی کی بنچ نے 47 سالہ پیراریولن کے ‘اچھے اخلاق’ ، صحت سے متعلق مسائل اور دیگر پہلوؤں پر غور کرتے ہوئے اس کی ضمانت کی عرضی قبول کی۔ عدالت عظمیٰ نے عرضی منظور کرتے ہوئے واضح طور پر کہا کہ ضمانت نچلی عدالت کی جانب سے متعینہ شرائط کی بنیاد پر دی جائے گی۔ وہ فی الحال پیرول پر ہے ۔ بنچ نے 30 سال سے زیادہ قید میں رہنے والے پیراریولن کی تین بار پیرول پر رہائی کے دوران کوئی شکایت موصول نہ ہونے کے حقائق کو دیکھنے کے لیے ضمانت کی درخواست کی۔بنچ نے پیراویلن نے 30 برسوں سے زیادہ وقت تک جیل میں قید رہنے اور پیرول پر تین بار رہا کیے جانے کے دوران کسی طرح کی شکایت نہیں ملنے کے حقائق پر غور کرنے کی اپیل کو ضمانت کی بنیاد بنائی گئی ۔ ضمانت پر سماعت کے دوران ایڈیشنل سالیسٹر جنرل کے ایم نٹراج نے اس کی عرضی کی سخت مخالفت کی۔