دفعہ370کوہٹانے کاوعدہ بھاجپاکی مجبوری:سوز

سرینگر//پردیش کانگریس کے سابق صدرپروفیسر سیف الدین سوز نے کہا کہ آئین کی دفعہ370کوہٹانے کا وعدہ بھاجپا ہمیشہ انتخابات کے موقعہ پر کرتی ہے تاکہ ملک کے ووٹروں کو جھانسہ دے کر اُ س سے ووٹ حاصل کئے جائیں ۔ایک بیان میں سوز نے کہا کہ دفعہ370کو ہٹانے کا وعدہ کرنا بھاجپا کی مجبوری ا ور وقتی ضرورت ہے ۔سوز نے کہا کہ میری ذاتی لائبریری کے ایک شیلف میں 1998,، 2004, ،  2009،  2014 اور 2019  کے عام انتخابات سے متعلق بی جے پی کے پانچ انتخابی منشور موجود ہیں۔ ان پانچوں منشوروں میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ آئین کی دفعہ 370 کو ہٹایا جائیگا۔ یہ دعویٰ گمراہ کن ہے اور اس کی ساری دلیل بے بنیاد !یہ جھانسہ بی جے پی ہمیشہ ووٹروں کو عام انتخابات کے موقعہ پر اپنی جیت کیلئے دیتی رہی ہے اور متذکرہ منشوروں میں ایک زبان میں یہ کھوکھلا دعویٰ لکھا گیا تھا۔انہوں نے کہاکہ اب آج 2019 کیلئے امیت شاہ کی مجبوری تو سمجھی جا سکتی ہے۔ورنہ کیا وہ اتنے نافہم تھوڑے ہو سکتے ہیں کہ اُن کو یہ خبر نہیں کہ دفعہ 370 کو جموں وکشمیر کے لوگوں کی مرضی کے خلاف کسی بھی صورت میں ہٹایا نہیں جا سکتا۔