’دانشورانہ املاک کے حقوق‘پر یک روزہ ورکشاپ

راجوری //باباغلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی میں اختراعی ادارہ کونسل(Institution Innovation Council)کے تحت ’’دانشورانہ املاک کے حقوق‘‘کے موضوع پر ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا گیاجس میں ڈاکٹر وپن کّکر پروفیسرشری ماتاویشنودیوی یونیورسٹی کٹرہ نے دانشورانہ املاک کے حقوق کے بارے میں معلوماتی لیکچردیا۔پروگرام میں پروفیسر اقبال پرویز ڈین آف اکیڈمک افیرس نے صدارت کے فرائض انجام دئے ۔انہوں نے کلیدی خطبہ بھی پیش کیا جس میں انہوں نے کہا کہ انہیں خوشی ہے کہ بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی نئے نئے علمی،سائنسی اور ادبی پروگرام کا انعقاد کرکے طلباکو بہتر سے بہتر معلومات بہم پہنچانے کا کام کررہی ہے۔انہوں نے آئے ہوئے مہمان کو خوش آمدید کہا اور ان کی عزت افزائی کے لئے مومنٹو بھی پیش کیا۔پروفیسر جی ایم ملک ڈین آف اسٹوڈنٹس مہمان ذی وقار کے طور پر موجود تھے ۔اس دوران سیول انجینئرنگ کالج کے پرنسپل ڈاکٹر محمد اصغر غازی نے بھی اپنے خیالات کااظہار کیا۔ باہر سے آئے ہوئے مہمان خصوصی ڈاکٹر وپن کّکر نے اپنے لیکچر میں تمام حاضرین کو ادبی،تکنیکی اور تجارتی جملہ حقوق کے بارے میں بتا یا کہ آج کل کے دور میں یہ بات کافی اہمیت کی حامل ہے کہ اساتذہ اور طلبا کو اپنے ادبی ،تکنیکی اور تجارتی حقوق کے بارے میں مکمل واقفیت ہونی چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ کس طرح آج کل کے مادیت پرست دور میں محنت سے تیار ہوئی املاک چرائی جاسکتی ہیں ۔انہوں نے مختلف حقوق سے متعلق جانکاری دیتے ہوئے ان کا تاریخی پس منظر بھی بیان کیا ۔اس دوران نے اساتذہ اور طلبا نے مہمان خصوصی سے کچھ سوالات بھی پوچھے۔اس پروگرام میں ڈاکٹر ماجد بشیر ملک صدر شعبہ انفارمیشن ٹیکنالوجی،ڈاکٹر قمر رئیس صدر شعبہ کمپیوٹر سائنس، وشال پوری صدر الیکٹرانکس اینڈ کمیونیکیشن ،حیدر معراج اسسٹنٹ پروفیسر شعبہ الیکٹرک انجینئرنگ،خلیل احمد ،شفقت مغل صدر شعبہ الیکٹرکل انجینئرنگ ،ذاکر ملک بھلیسی کے علاوہ مختلف شعبہ جات کے طلبہ وطالبات کی ایک بھاری تعدادموجود تھی۔اس پروگرام کے منعقد کروانے اور اس کی نظامت میں فرخندہ انا اسسٹنٹ پروفیسر SOET نے اہم رول ادا کیا۔