خطہ پیر پنچال کے دونوں اضلاع میں موسم سرما کی پہلی بارش و برفباری کا عمل شروع ،معمولات زندگی متاثر

راجوری +پونچھ //جموں وکشمیر کے دیگر حصوں کی طرح خطہ پیر پنچال کے بالائی و نشیبی علاقوں میں موسم کی پہلی بارش و برفباری کا عمل شروع ہوگیا ہے ۔محکمہ موسمیات کی  پیش گوئی کے عین مطابق وادی کشمیر کے پہاڑی اور میدانی علاقوںکیساتھ ساتھ خطہ پیر پنچال کی پہاڑیوں اور میدانی علاقوں میں اتوار کو ہی کو ہلکی برف باری اور بارش کا سلسلہ شروع ہوا ۔میدانی علاقوں میں اتوار کی صبح سے ہی وقفہ وقفہ سے بارشوں کا سلسلہ شروع ہوا جس سے سردی کی شدت میںاضافہ ہو گیا ہے ۔اتوار کے روز بلند و بالا علاقوں میں ہلکی برف باری اور میدانی علاقوں میں موسلادھار بارش سے معمولات زندگی بری طرح متاثر ہوئے۔حکام نے بتایا کہ موسم کی پیشن گوئی کے مطابق بارش اتوار کی صبح شروع ہوئی اور شام کے اوقات تک جاری رہی اور آخری اطلاعات موصول ہونے تک شام کے اوقات میں وقفے وقفے سے بارش جاری تھی۔حکام نے بتایا کہ راجوری اور پونچھ اضلاع کے تمام اونچے مقامات پر اتوار کی صبح تازہ برف باری شروع ہوئی جبکہ آخری اطلاعات موصول ہونے تک اونچائی والے علاقوں میں دو فٹ تک برفباری ہونے کا اندازہ لگایا جارہا ہے ۔انہوں نے مزید بتایا کہ میدانی علاقوں میں دن بھر موسلا دھار بارش کا سلسلہ جاری ہے جس سے معمولات زندگی بری طرح متاثر ہوئے اور لوگوں نے گھروں کے اندر ہی رہنے کو ترجیح دی۔بارش اور برف باری دونوں نے پیر پنجال کے علاقے میں سردی کی لہر شروع کر دی ہے اور جڑواں اضلاع کے بازار علاقے دن بھر ویران رہے ہیں۔خطہ پیر پنچال کے زیادہ تر علاقوں میں رواں موسم کی پہلی برف باری ہوئی جس کے نتیجے میں سب ڈویژن تھنہ منڈی کے متعدد علاقوں میں بجلی کی فراہمی متاثر رہی۔ واضح رہے کہ اتوار کی صبح سے اضلاع راجوری پونچھ کے تمام بالائی علاقوں پر برف باری کی شروعات ہوئی اور ضلع راجوری کے بدھل ، کوٹرنکہ ، کنڈی ، تھنہ منڈی ، درہال اور دہرہ کی گلی کے بالائی علاقوں میں برف باری ہوئی جبکہ ان اضلاع کے میدانی علاقوں میں ہلکے سے اوسط درجے کی بارشوں کا سلسلہ دن بھر جاری رہاجس کی وجہ سے پورے خطہ پیر پنچال میں سردی نے دستک دے دی ہے۔کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے علاقہ کے مکینوں نے بتایا کہ اتوار صبح سے جاری بارش اور تیز رفتار ہواؤں کی وجہ سے اکثر مقامات پر بجلی کے کھمبے گر گئے اور تاریں ٹوٹ گئیں جس کی وجہ سے بجلی کی لائنوں کو نقصان پہنچا اور بجلی ابھی بحال نہیں ہو سکی جس کی فوری مرمت کا کام جاری ہے۔ دوسری جانب محکمہ موسمیات کی پیشن گوئی کے مطابق اگلے چوبیس گھنٹوں میں ہلکے سے اوسط درجے کی بارش اور مطلع ابر آلود رہنے کا امکان ظاہر کیا گیا ہے۔ضلع پونچھ کی تحصیل منڈی کے بالائی علاقوں میں بھی ہلکی برف باری ہوئی جبکہ کہ میدانی علاقوں میں موسلا دار بارش کا سلسلہ اتوار کی دیر شام تک جاری تھا جس کی وجہ سے درجہ حرارت میں کافی گرواٹ آئی اور سردی میں بھی کافی شدت محسوس کی گئی تفصیلات کے مطابق تحصیل منڈی کے بالائی علاقوں لورن ساوجیاں آڑائی ،براچھڑی کے پہاڑوں پر ہلکی برف باری ہوئی جبکہ تحصیل کے میدانی علاقوں میں شدید بارش جس کی وجہ سے عام لوگوں کی زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی۔منڈی کے لورن بلاک کے بلائی علاقوں میںاتوار کی صبح سے ہی بارش کا سلسلہ شروع ہوا جبکہ بعد دوپہر بعد برف باری  ہوئی اسی طرح تحصیل کے سرحدی علاقہ ساوجیاں میں بھی ہلکی برف باری ہوئی جبکہ تحصیل کے میدان علاقوں میں شدید بارش ہوئی جس کی وجہ سے کڑاکے کی ٹھنڈ محسوس کی گئی اور عام لوگوں کی زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی وہیں پر منڈی تحصیل کے دور دراز علاقوں میں رہنے والی عوام نے انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ دور دراز علاقوں میں رہنے والے لوگوںکیلئے بجلی،پانی تیل کھاکی اور راشن کے انتظامات کریں تاکہ آنے والے وقت میں موسم کی خرابی کی وجہ سے عوان کو کسی طرح کی مشکلات کا سامنانہ کرنا پڑے۔ ادھر تحصیلدار منڈی شہزاد لطیف خان نے کشمیر عظمی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ موسم کی خرابی کے پیش نظر انتظامیہ نے تحصیل کے بالائی اور میدانی علاقوں میں راشن تیل خاکی عوام کیلئے سٹور کر دیا ہے۔اسی طرح خطہ کے مینڈھر سب ڈویژن ،نوشہرہ ،کوٹرنکہ اور منجا کوٹ کے پہاڑ ی علاقوں میں برفباری کیساتھ ساتھ میدانی علاقوں میں بارش ہوئی جس کی وجہ سے جہاں سردی کی شدت میں اضافہ ہو گیا ہے وہائیں کسانوں نے بھی اس بارش پر خوشی کا اظہار کیا ہے ۔