خانہ بدوش طبقے کے بچوں کو تعلیم

ارشاد احمد
گاندربل//جموں کشمیر میں موجود سرکاری اسکولوں کی حالت جہاں کافی دگرگوں ہے وہیں دوسری جانب گاندربل کے علاقہ منیگام میں موجود گورنمنٹ مڈل سکول درپورا نے خانہ بندشوں کے بچوں کو تعلیم کی روشنی سے منور کرنے کی پہل کرنے کے ساتھ ہی ان غریب اور متوسط طبقے کے بچوں کے مستقبل سنوارنے کی انوکھی کوشش کرنے کے دوران ان بچوں کو سکول میں مفت تعلیم، کتابیں، وردی، سکول بیگ اور جوتے فراہم کئے ہیں۔ نالہ سندھ کے کنارے پر واقع فاروق عبداللہ ماحولیاتی پارک کے قریب رہائش پذیر خانہ بدوشوں کے بچے جن کی عمر پانچ سال سے لیکر دس گیارہ سال تک ہے دن بھر آوارہ گردی کرتے رہتے تھے۔ ان کو سکول میں داخلہ دلاکر روزانہ ان کو اپنی ذاتی گاڑیوں میں سوار کرکے سکول لاتے اور چار بجے سکول بند ہونے کے بعد ان کو واپس چھوڑ کر آتے ہیں۔گورنمنٹ مڈل سکول درپورا منیگام میں تعینات اساتذہ کی اس پہل اور انوکھی کوشش کی وجہ سے 30 سے زائد بچوں کو تعلیم کی روشنی سے منور کرنے کے تحت ان کے تابناک مستقبل سنوارنے کی پہل کی جارہی ہے جس کی مقامی لوگوں کی جانب سے ستائش اور سراہنا کی جارہی ہے ۔