خاندانی سیاست والے13جولائی کے شہداء کوخراج عقیدت اداکرنے کے حقدار نہیں :سجادلون

سرینگر// پیپلز کانفرنس کے چیرمین سجاد غنی لون نے کہا ہے کہ خاندانی سیاست کرنے والوں کو13جولائی 1931کے شہدا ء کو خراج عقیدت ادا کر نے کا کو ئی حق نہیں ہے ۔پارٹی کے پبلک آئوڑ ریچ پروگرام ’’سلام و کلام ‘‘ کے تحت رفیع آباد بارہمولہ میں ہزاروں پارٹی کارکنوں کے اجتماع سے خطاب کر تے ہو ئے سجا د غنی لون نے کہا کہ کل 13جولائی تھا اور ہم 1931کی جدو جہد کے شہداء کو خراج عقیدت ادا کر رہے تھے ۔کیا میں فاروق عبد اللہ سے ایک سوال پوچھ سکتا ہوں اگر 13جولائی کو شخصی راج کی زیادتیوں کیلئے یا د کیا جا تا ہے تو پھر فاروق عبداللہ کے دور اقتدار میں ہوئے قتل عام کو یاد کر نے کیلئے کو نسی تاریخ کا تعین کر یںگے ۔سجاد لون نے کہا کہ یہ سراسر منافقت ہے ،آپ چاہتے ہیں کہ لوگ اُن شہدا ء کو یاد کریں جنہوں نے آزادی ،وقار اور بااختیار بنانے کی مقدس جد و جہد میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ۔اور ہمیں انہیں یاد کر نابھی چاہئے ۔۔۔تاہم ان لوگوں کے بارے میں آپ کیا کہتے ہیں جنہیں پچھلے تیس سال کے دوران دو روایتی پارٹیوں کے دور اقتدار میں قتل کیا گیا ؟۔کیا آپ سمجھتے ہیں کہ ہم عارضہ ٔ یاد داشت میں مبتلا ہیں اور ہم 1987سے اب تک ہوئے کشت و خون کو بھول گئے ہیں ۔ہم سب کو اس پر سوچنا چاہئے اور بڑی گہرائی سے سوچنا چاہئے ۔سجاد غنی لون نے کہا کہ 13جولائی کے موقعہ پر ان پارٹیوں کی جانب سے کی جانے والی ڈرامہ بازی بڑا ستم ہے اور اس سے ان کے قول و فعل میں ظاہر تضاد نظر آتا ہے ۔جن خاندانوں نے 13جولائی کے شہدا ء کی قربانیوں کے ساتھ کھلواڑ کیا ہے اور کشمیر میں اس سے بھی بڑے قتل عام کے احکامات صادر کر کے اس کی نگرانی کی ہے، وہی شہدا ء کی قبروں پر جاکر وہاں گل دائرے رکھنے کا ڈرامہ رچاتے ہیں ۔ان خاندانوں اور شہدائے 1931کے درمیان کو ئی بھی چیز ایسی نہیں ہے جس کو یہ لوگ ایک قدر مشترک قرار دے سکتے تھے بلکہ ان لوگوں نے ریاستی عوام کا استحصال کر کے اسی غیر منصفانہ شخصی راج کی جڑیں مضبوط کی ہیں جس کے خلاف شہدائے 13جولائی نے اپنی آواز بلند کی تھی اور اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا تھا ۔سجاد غنی لون نے اس عہد کا اعادہ کیا کہ وہ ان شہدا ء کی جدو جہد کو آگے لے جا کرکشمیری عوام کو بااختیار بنانے اور انہیں اپنے مستقبل کا مالک خود بنانے کیلئے کو شش کرتے رہیں گے ۔رفیع آباد میں منعقدہ پروگرام پارٹی کے آئوٹ ریچ پروگرام ’سلام و کلام‘کا ایک حصہ تھا تاکہ لوگوں کے مسائل کے حوالے سے جانکاری حاصل کر کے زمینی سطح پر تبدیلی لانے کے پارٹی کے ایجنڈاکو تکمیل تک پہنچایا جا سکے ۔کنونشن میں سینکڑوں پارٹی کارکنان نے شر کت کی ۔پارٹی چیر مین سجاد غنی لون ،سینئر لیڈران عبدالغنی وکیل اور خورشید خان نے بھی کارکنوں سے خطاب کیا ۔پارٹی کے سینئر نائب صدر عبد الغنی وکیل نے جلسے سے خطاب کر تے ہوئے پچھلی حکومتوں پر رفیع آباد علاقے کو پس پشت ڈالنے کا الزام لگایا۔