حج 2021 | خواہشمند افراد کی تعداد میں 60فیصد کمی | 72000درخواستیں موصول،فارم جمع کرنیکی تاریخ 10جنوری

سرینگر//سال 2021میں حج پر جانے کے خواہشمند افراد کی تعداد میں 60فیصد کمی آئی ہے جبکہ اسی سال کی ابتداء میں کورونا وائرس کے خوف سے سال 2020کاحج منسوخ کرنا پڑا تھا ۔اعداد و شمارکے مطابق سال 2021میں حج کیلئے صرف 7ہزار 200افراد نے درخواستیں جمع کی ہیں جو گزشتہ چند سال کے مقابلے میں 60فیصد کم ہے۔ پچھلے پانچ سال میں اوسطً ہر سال 20سے 25ہزار افراد درخواستیں دیتے تھے لیکن ان میں جج کمیٹی آف انڈیا صرف 10ہزار لوگوں کو حج کیلئے روانہ کرتی تھی۔ جے اینڈ کے حج ایگزیکیٹو آفیسر ڈاکٹر عبدالسلام نے بتایا ’’موصولہ درخواستیں کافی کم ہیں ،اسلئے ہم نے فارم جمع کرنے کی تاریخ 10جنوری تک بڑھائی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے خوف کی وجہ سے کم لوگوں نے درخواستیں دی ہیں۔ انہوں نے کہا’’ پچھلے سال حج کو عالمی وباء کی وجہ سے منسوخ کیا گیا  تھا‘‘۔حج کمیٹی آف انڈیا نے کے ایک بیان کے مطابق حج2021 کیلئے پورے بھارت سے 40ہزار درخواستیں معصول ہوئی ۔ حج کمیٹی آف انڈیا کے بیان میں کہا گیا ہے کہ، ان میں ایسی500 خواتین بھی شامل ہیں جو محرم (male companion) کے بغیر حج پر جانا چاہتے ہیں۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ جو خواتین بغیر محرم کے حج کرنے کی خواہشمند ہے، ان سے ابھی بھی درخواستیں لی جارہی ہیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ اس زمرے کے تحت حج کرنے کی خواہشمند خواتین کو قرعہ اندازی سے چھوٹ دی جائے گی۔ افسران کا کہنا ہے کہ نکتہ آغاز میں کمی لانے کی وجہ سے حج کرانے کی رقم میں اضافہ ہوا ہے کیونکہ پورے بھارت میں نقطہ آغاز 22سے کم کرکے 10کردیا گیا ہے لیکن سرینگر میں سہولیات کو قائم رکھا گیا ہے۔ ایگزیکیٹو آفیسر نے کہا ’’احمدآباد میں ایک خواہشمند کا خرچہ 3لاکھ 30ہزار، دلی، حیدر آباد اوربنگلورو میں 3لاکھ 50ہزار، سرینگر اور کوچین میں 3لاکھ 60ہزار، کولکتہ میں3لاکھ 70ہزار جبکہ گوہاٹی سے 4لاکھ روپے خرچہ آتا ہے‘‘۔