جنگلات کے درمیان قائم ہائی سکول سنگیوٹ کا درجہ بڑھ نہ سکا

مینڈھر //سب ڈویژن مینڈھر کے سنگیوٹ علاقہ میں قائم کر دہ گور نمنٹ ہائی سکول سنگیوٹ کا درجہ گزشتہ کئی برسوں سے بڑھایا ہی نہیں جارہا ہے جس کی وہ سے سالانہ درجنوں طلبا ء بالخصوص لڑکیاں تعلیم چھوڑنے پر مجبور ہو جاتی ہیں ۔ایک وسیع جنگلات کے درمیان آباد سنگیوٹ گائوں ایک طرف سے راجوری ضلع کی منجا کوٹ تحصیل کے کالابن گائوں سے منسلک ہے جبکہ دوسری جانب سے تھنہ منڈی سب ڈویژں شاہدارہ کے ساتھ اس کی سرحد جوڑتی ہے لیکن اس گائوں کے لگ بھگ ہر طرف ایک وسیع جنگلات ہے جس کی وہ سے گائوں میں بنیادی سہولیات کا اکثر فقدان بھی رہتا ہے ۔گور نمنٹ ہائی سکول سنگیوٹ میں اس وقت 400سے زائد طلباء زیر تعلیم ہیں لیکن گزشتہ کئی عرصہ سے سکول کا درجہ بڑھانے کی مانگیں بھی کی جارہی ہیں تاہم ابھی تک سکول کا ہائر سکینڈری کا درجہ نہیں دیا گیا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ دیگر علاقوں میں قائم کر دہ ہائر سکینڈری سکول کافی دور ہو نے کی وجہ سے زیادہ تر طلباء اس جدید دور میں بھی بنیادی تعلیم حاصل کر نے کے بعد اس عمل کو چھوڑ کر گھریلو کام کرنے کو ہی ترجیح دیتے ہیں جبکہ ان میں زیاد ہ تعداد لڑکیوں کی ہوتی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ علاقہ میں جانے والی ایک رابطہ سڑک انتہائی خراب ہونے کی وجہ سے طلباء ہائر سکینڈری سکولوں میں جانے کیلئے پیدل سفر کرتے ہیں جوکہ لڑکیوں کیلئے آسان نہیں ہے ۔پنچایتی اراکین و مکینوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ اور جموں وکشمیر انتظامیہ سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ ہائی سکول کا درجہ بڑھایا جائے تاکہ طلباء آسانی کیساتھ اعلی تعلیم حاصل کر سکیں ۔