جموں کشمیراورلداخ میں وقف بورڈوں کا قیام عنقریب: نقوی

 سرینگر//اقلیتی امور کے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے جمعہ کے روز کہا کہ جموں وکشمیر اور لداخ کے وسطی علاقوں میں جلد ہی وقف بورڈ قائم کئے جائیں گے اور اس کے لئے یہ عمل شروع ہوچکا ہے۔جے کے این ایس کے مطابقنئی دہلی میں مرکزی وقف کونسل کے اجلاس کی صدارت کرنے کے بعد اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی نے ایک بیان میں کہا کہ آزادی کے بعد پہلی بار جموں و کشمیر اور لیہہ و کرگل علاقوں میں وقف بورڈ قائم کئے جائیں گے۔انہوںنے کہاکہ دفعہ370 کی منسوخی کے بعد ہی ایسا کرنا ممکن ہوگیا ہے۔مختار عباس نقوی نے کہاکہ جموں و کشمیر اور لداخ میں وقف بورڈ معاشرے کی فلاح و بہبود کیلئے وقف املاک کے مناسب استعمال کو یقینی بنائیں گے۔مرکزی وزیر برائے اقلیتی امورمختارعباس نقوی نے کہا کہ مرکزی حکومت خطوں میں وقف املاک پر سماجی و اقتصادی اور تعلیمی سرگرمیوں کیلئے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر کیلئے مناسب مالی معاونت فراہم کرے گی۔انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ جموں و کشمیر اور لہیہ کرگل علاقوں میں ہزاروں وقف املاک موجود ہیں اور ان کے اندراج کے لئے کارروائی شروع کردی گئی ہے۔مرکزی وزیر نے بتایا کہ وقف املاک کی ڈجیٹائزیشن ، جیو ٹیگنگ یا جی پی ایس میپنگ کا کام بھی شروع کردیا گیا ہے اور کام جلد ہی مکمل کرلیا جائے گا۔ مختار عباس نقوی نے کہا کہ ملک کے دوسرے حصوں کی طرح ہی مرکزی حکومت جموں وکشمیرمیں بھی اسکول ، کالج ، آئی ٹی آئی ، پولی ٹیکنیک ، گرلز ہاسٹل ، اسپتال ، کثیرامقصد کمیونٹی ہال ،سدبھائو منڈپ،ہنرمندوں کیلئے تربیتی مراکز ، مشترکہ خدمت مراکز ، روزگارپرمبنی مہارت مراکز تعمیر کرے گی۔