جموں و کشمیر کا پہلا پبلک سائیکل شیئرنگ سسٹم جموں میں شروع ہوگا

یو این آئی
جموں//ماحول دوست نقل و حرکت کو فروغ دینے کے لیے سمارٹ سٹی مشن کے تحت جموں میں پبلک سائیکل شیئرنگ سسٹم شروع کیا جائے گا۔ایک عہدیدارکہا کہ یہ نظام صارفین کو نامزد آٹومیٹک ڈاکنگ اسٹیشنوں سے ایک سائیکل کرائے پر لینے اور اسے منزل کے قریب واقع کسی دوسرے ڈاکنگ اسٹیشن پر جمع کرنے کی اجازت دے گا۔انہوں نے کہا کہ یہ جموں و کشمیر میں اپنی نوعیت کا پہلا اقدام ہوگا اور تمام شہریوں کے لیے معمولی کرایہ پر دستیاب ہوگا۔جموں اسمارٹ سٹی لمیٹڈ (جے ایس سی ایل) نے پورے شہر میں 60 خودکار ڈاکنگ اسٹیشن قائم کیے ہیں اور ہر ایک کے پاس سائیکلوں کو پارک کرنے اور لاک کرنے کے لیے 10 سلاٹ ہیں۔عہدیدارنے کہا “شہر کے نمایاں مقامات پر اب تک ساٹھ ڈاکنگ اسٹیشن قائم کیے جا چکے ہیں اور مزید 60 کے لیے کام جاری ہے”۔انہوں نے کہا کہ جموں بس اسٹینڈ، اندرا چوک، گورنمنٹ میڈیکل کالج کا ایگزٹ گیٹ، سپر اسپیشلٹی ہسپتال، پریڈ چوک، جموں ایئرپورٹ کا داخلی دروازہ اور رگونتھ مندر ان مقامات میں شامل ہیں جہاں ڈاکنگ اسٹیشنز لگائے گئے ہیں۔جے ایس سی ایل کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر (سی ای او) اونی لواسا نے کہا کہ کل 720 مکینیکل سائیکلیں، 80 الیکٹرک سائیکلیں (پیڈل کی مدد سے)، 120 ڈاکنگ اسٹیشن، ایک موبائل ایپلیکیشن، سائیکل کی دوبارہ تقسیم کرنے والی گاڑی اس منصوبے کے اجزاء ہیں۔لواسا نے کہا “پبلک بائیسکل شیئرنگ سسٹم نہ صرف شہریوں کو اچھی صحت برقرار رکھنے میں مدد دے گا بلکہ شہر میں آلودگی کی سطح کو بھی کم کرے گا۔”عہدیداروں نے کہا کہ صارف موبائل نمبر کے ساتھ موبائل ایپ میں ڈاؤن لوڈ اور رجسٹر کرکے سائیکل کرایہ پر لے سکتا ہے۔ ایپ اینڈرائیڈ اور آئی او ایس دونوں پلیٹ فارمز پر دستیاب ہے۔انہوں نے کہا کہ ایک دن میں 30 منٹ کی پانچ سواریوں کے لیے کم از کم رکنیت 50 روپے میں دستیاب ہے اور ایک سال میں ہر ایک 30 منٹ کی 1500 سواریوں کے لیے زیادہ سے زیادہ رکنیت 1,500 روپے میں دستیاب ہے۔