تشدد سے مسائل کے حل کی افادیت متاثر، مودی ’کشمیر امن پروجیکٹ‘ کی قیادت کریں

 سرینگر//وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے ملک کی سیاسی قیادت سے اپیل کی ہے کہ وہ پارٹی خطوط سے بالا تر ہو کر ریاست جموں وکشمیر کی درد بھری آوازوں سنیںاور ریاستی عوام کو اس درد سے باہر نکالنے میں اپنا تعاون دیں۔وادی کے مختلف حصوں سے آئے ہوئے کافی تعداد میں نوجوانوں کے ساتھ استفسار کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہ موزون وقت ہے جب پورے ملک کو ریاستی عوام کا تعاون کرنا چاہیے تاکہ وہ ہلاکتوں اور غیر یقینیت کے بھنو ر سے باہر نکل سکیں۔وزیر اعلیٰ کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی ملک کے ایک طاقتور سیاسی سربراہ ہیں اور وہ اس امن پروجیکٹ کی قیادت کر کے ریاست میں خون خرابے پر روک لگا سکتے ہیں جو ریاست میں پچھلے تین دہائیوں سے جاری ہے۔محبوبہ مفتی نے کہا کہ امن ، مفاہمت اور مذاکرات دونوں حکمران پارٹیوں کے مابین طے پائے ایجنڈا آف الائنس کی بنیاد ہے اور ریاستی عوام کو وزیر اعظم نریندر مودی کی قائدانہ صلاحیتوں اور اس کے سیاسی وقار میں کافی اعتماد ہے اور لوگ ان اقدار کی بحالی کے لئے منتظر ہے ۔انہوںنے کہا کہ ہماری ریاست اور پورا خطہ چاہتا ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی کے جذبے کو بحال کریں اور لوگ چاہتے ہیں کہ ملک میں مختلف سیاسی نظریات سے تعلق رکھنے والے لوگ بٹوارے کی روایتی سیاست کے چنگل میںنہ پڑتے ہوئے ایسے اقدام کی حمایت کریں گے جس کی بدولت وزیراعلیٰ کو اُمید ہے کہ ریاست غیر یقینیت کی صورتحال سے اُبھر کر ترقی اور خوشحالی کی ایک نئی راہ پر گامزن ہوسکے۔وزیراعلیٰ نے یوم آزادی کے موقعہ پر کشمیر کے حوالے سے وزیر اعظم کے بیان کا ذکر کرتے ہوئے اُمید ظاہر کی کہ ریاست کے معاملات سے وابستہ ملک کے ہر ایک شخص کو اس بیان کو حقیقت میں بدلنے کے لئے اپنا رول ادا کرنا چاہئے ۔ انہوںنے کہا کہ ذرائع ابلاغ سے انتظامیہ تک ، حکمت عملی سے وابستہ برادری اور حفاظتی عملے یہاں تک کہ ہر ایک کو اس قومی کوشش کا حصہ بننا چاہیے ۔وزیر اعلیٰ نے مزید کہا کہ وقت آگیا ہے کہ نوجوانوں میں ایک اُمید جگائی جائیں اور انہیں تشدد کا راستہ اختیار نہ کرنے کے لئے آمادہ کیا جانا چاہیے ۔انہوںنے کہا کہ ان نوجوانوں کو امن عمل میں شامل کیا جانا چاہیے تاکہ وہ بربادی کے بھنور سے دور رہ سکیں۔وزیر اعلیٰ نے کہاکہ ریاست میں ایک کامیاب امن عمل سے ہی ملک میں جمہوریت اور انصاف کے تقاضوں کو پورا کیا جاسکتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ملک کی قیادت ریاستی عوام کا اعتماد اور دل و دماغ جیت کر خطے میں اطمینان کی سطح میں اضافہ کرسکتے ہیں۔وزیر اعلیٰ نے نوجوانوں کو ایک بیش بہاخزانہ قرار دیتے ہوئے کہاکہ ریاست سے تعلق رکھنے والے کئی نوجوان لڑکوں اور لڑکیوں نے مشکل حالات کے باوجود بھی کامیابی کی کہانیاں رقم کی ہیں اور ان میں سے کئی ایک نے نہ صرف ملکی بلکہ عالمی سطح پر اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا ۔وزیر اعلیٰ نے کہاکہ ہمارے نوجوانوں کی صلاحیتوں کو امن اور اخوت کے ایک ساز گار ماحول میں صحیح سمت دی جاسکتی ہے ۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ دور جدید میں مسائل کو حل کرنے کے لئے تشدد کے راستے نے اپنی افادیت کھو دی ہے ۔