بھدرواہ میں تیسرے روز کرفیو بدستور جاری | ڈوڈہ اور کشتواڑ اضلاع میں قتل کیخلاف ہڑتال

بھدروار+ڈوڈہ + کشتواڑ  // قصبہ اور گردو نواح علاقوں میں ہفتہ کے روز مسلسل تیسرے روز بھی کرفیو جاری رہا۔ ادھر ڈوڈہ اور کشتواڑ اضلاع  میں اس ہلاکت کیخلاف پر امن بند رہا۔ایس ایس پی ڈوڈہ شبیر احمد ملک نے بتایا کہ علاقہ میں صورتحال پر امن رہی اور کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک 6رکنی خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی ہے جس کی قیادت ایس پی بھدرواہ راج سنگھ گوریا کریں گے جب کہ سنیئر پراسیکیوشن آفیسر تیمور جہانگیر خان، ایس ایچ او منیر احمد خان، احسان الحق، صفدر حسین، پروین کمار ایس آئی ٹی کے ممبر ہوں گے۔ نئی ایس آئی ٹی کے قائد راجندر سنگھ گوریا نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ ٹیم نے جموں سے آئے فورینسک ماہرین کے ہمراہ جائے وقوع کا دورہ کیا اور نئے سرے سے کچھ نمونے حاصل کئے جو جموں ایف ایس ایل بھیجے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایس آئی ٹی ہر زاویہ سے معاملہ کی جانچ کر رہی ہے اور امید ہے کہ جلد ہی اس میں کوی پیش رفت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس نے 12بور کی بندوق ضبط کر کے ایف ایس ایل جموں بھیج دی ہے ۔ پولیس کے مطابق نہ ہی قصوروار کی شناخت ہوئی ہے اور نہ ہی اب تک قتل کے پیچھے اغراض ومقاصد معلوم ہوئے ہیں۔ادھربھدرواہ میں مبینہ گائو رکھشکوں کی فائرنگ میں 50سالہ شہری نعیم شاہ کی ہلاکت کے خلاف ڈوڈہ اور کشتواڑ اضلاع کے بیشتر قصبہ جات بشمول بٹوت، ٹھاٹھری ، ڈوڈہ ، کشتواڑ، چھاترو، مغل میدان، درابشالہ وغیرہ میں پر امن بند رکھا گیا ۔ بند کی کال سیرت کمیٹی ڈوڈہ، انجمن اسلامیہ بھدرواہ اور مجلس شوریٰ کشتواڑ کی جانب سے دی گئی تھی۔ سرکاری تعطل کی وجہ سے جہاں سرکاری دفاتر و تعلیمی ادارے بند تھے وہیں کال کے مطابق مسلم طبقے کے کاروباری ادارے مکمل طور بند رہے اور ٹریفک بھی معمول سے بہت کم تھی۔ صبح سے ہی سڑکیں ویران تھیں ۔