بریخہ بہزاد کی نظموں پر مشتمل ’مون اینڈ ہر سِکارز‘ کا اجراء

سرینگر// نوجوان قلمکار بریخہ بہزاد کی نظموں پر مشتمل مجموعہ ’ مون اینڈ ہر سکارس‘‘ کا اجراء کیاگیا۔ سرینگرمیں ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں قلمکاروں،شاعروں اور دانشوروں نے شرکت کی۔ تقریب میں کتاب کی مصنفہ بریخہ بہزاد نے کہا کہ’مجھے بچپن سے شاعری میں دلچسپی تھی اور12برس کی عمر سے ہی میںنے شاعری شروع کی‘۔ انہوں نے کہا کہ اس مشغلہ اور شوق میں انہیں  کنبہ نے کافی تعاون فراہم کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ظریف احمد ظریف نے کشمیر ی تہذیب اور ثقافت میں شاعری کی جڑوں کو مضبوط کرنے کی صلاح دیتے ہوئے اپنی مادری زبان کو سیکھنے،سکھانے اور اس کو فروغ دینے پر زور دیا۔ تقریب میں کشمیری نژاد ہاروڑ یونیورسٹی کے فیکلٹی ممبر معراج متو نے کہا کہ کشمیر میں نوجوان قلمکاروں جو،ملٹن،کیھتس،شکسپئر اور دیگر شاعروں کی تقلید کرنے کی کوشش کرتے ہیں،انکی حوصلہ افزائی کی جانی چاہے۔ انہوں نے کہا’’ ہمیں ہر سطح پر تخلیقی کام کی حوصلہ افزائی کرنی چاہے،تاکہ ایک سنجیدہ معاشرے کو قائم کیا جاسکے،جو ہمیں ترقی کیلئے جانب رہنمائی کرسکتا ہے۔‘‘ معراج متو نے کہا کہ اس کے بعد ہی مستقبل میں وہ وقت آئے گاجب نہ صرف کشمیر بلکہ اقوام عالم کے لوگ آپ سے آپ کی زبان سیکھنے کیلئے آئینگے ۔