برفباری کے بعد ہل کاکا کے مکینوں کی مشکلات میں اضافہ | بنیادی سہولیات دستیاب نہیں ،راستوں پر برف سے پیدل چلنا بھی محال

سرنکوٹ// سب ڈویژن سرنکوٹ کے دور افتادہ علاقہ ہل کاکا میں برفبار ی کے بعد لوگوں کاجینا محال ہو گیا ہے ۔پہلے سے ہی پسماندہ علاقہ میں پڑے بھاری برفباری کی وجہ سے پیدل چلنے والے راستے بھی گزشتہ کئی دنوں سے بند پڑے ہوئے ہیں جبکہ عام لوگوں کو پینے کے صاف پانی کیساتھ ساتھ بجلی جیسی بنیادی سہولیات بھی دستیاب نہیں ہیں ۔مقامی ذرائع نے بتایا کہ برفباری کے دوران عام لوگوں کو بھاری نقصان کا سامنا کرناپڑا ہے لیکن ابھی تک اس کا مکمل تخمینہ نہیں لگایا جاسکا ۔1ہزار سے زائد کی آبادی والا گائوں سب ڈویژن کے سب سے پسماندہ دیہات میں شمار ہوتا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ شدت کی برف سے مذکورہ پہاڑی علاقے میں 18 سے زائد کنبوں کا جینا مشکل ہو گیا۔ موسم کی خرابی کے باعث انہیں اپنے مال مویشیوں کو لیکر وہاں سے جب نکلنا پڑا تو ان کو مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ۔انہوں نے بتایا کہ ہل کاکا علاقہ میں رہائش پذیر لوگوں کو کھانے پینے کی اشیاء کی شدید قلت کیساتھ ساتھ دیگر بنیادی سہولیات کی شدید قلت کا سامنا کرناپڑرہا ہے ۔غور طلب ہے کہ پیر پنچال پہاڑیوں کے قریب آباد علاقہ میں لوگوں کیلئے ایک عام زندگی بھی انتہائی متاثر اور پریشان کن رہتی ہے لیکن برفباری میں صورتحال مزید ابتر ہو جاتی ہے ۔لوگوں نے بتایا کہ مذکورہ علاقہ میں پانی ،بجلی سڑک کی عدم دستیابی کیساتھ ساتھ مواصلاتی نظام بھی معیاری نہیں ہے جس کی وجہ سے صورتحال مزید خراب ہو جاتی ہے ۔گزشتہ کئی دنوں سے علاقہ میں ایک ویڈیو بھی سماجی سائٹس پر وائرل ہو رہی ہے جس میں مکینوں کی مشکلات کو دیکھا جاسکتا ہے ۔سرنکوٹ کی عوام نے جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ ہل کاکا علاقہ میں بنیادی سہولیات دستیاب رکھنے کیلئے ضلع انتظامیہ کو ہدایت جاری کی جائیں ۔