بادامی باغ کنٹونمنٹ بورڈ کی میٹنگ منعقد ، فاروق عبداللہ کی شرکت

 سرینگر//بادامی باغ کنٹونمنٹ بورڈ کی ایک میٹنگ کا انعقاد ہوا ، جس میں بورڈ کے تحت آنے والے علاقوں میں تعمیراتی کاموں اور لوگوں کے مسائل و مشکلات کے بارے میں جانکاری حاصل کی گئی۔ میٹنگ میںنیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے بھی شرکت کی۔ میٹنگ میں کچھ اہم مسئلے اُبھارے گئے، جن میں 2014کے سیلاب کے بعد جی بی پنتھ ہسپتال کو بورڈ کی طرف سے چلائی جارہی ڈسپنسری میں سے دو کمرے عارضی طور پر فراہم کئے گئے تاکہ بچوں کا علاج و معالجہ جاری ر ہے لیکن آج تک ان کمروں کو واپس نہیں کیا گیا، جس کی وجہ سے ڈسپنسری کے کام کاج میں مشکلات اور رکاوٹیں پیش آرہی ہیں۔ اس کے علاوہ بٹہ وار میں گورنمنٹ ہائی سکول ناگفتہ بہہ حالت میں ہے۔ اس کے علاوہ کنٹونمنٹ ایریا کے تحت آنے والے علاقوں میں تعمیراتی کاموں پر کوئی بھی پابندی نہیں ہونی چاہئے اور گیسٹ ہائوس بنانے کی بھی اجازت دی جانی چاہئے۔ اس کے علاوہ ٹیکسوں میں رعایت اور سڑکوں اور اندرونی سڑکوں کی فوری مرمت پر بھی زور دیا گیا۔ میٹنگ میں بتایا گیا کہ پی ایچ ای کی طر ف سے نل بچھانے کے کام اور ڈرینج کے کام میں سست رفتاری سے کام لیا جارہا ہے ، جس کی وجہ سے سڑکوں کی مرمت کا کام رکا پڑا ہے۔ ڈرینج کے کام سے قومی شاہراہ پر ٹریفک بھی طرح طرح متاثر ہورہا ہے اور اس کام میں سرعت لانے کی ضرورت ہے۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے میٹنگ میں بتایا کہ وہ ہسپتال سے کمروں کی واپسی، سرکاری سکول کی تعمیر نو، ڈرینج اور پائپیں بچھانے کے کام میں سرعت لانے کے معاملات حکومت کیساتھ اُٹھائیں گے۔ انہوں نے ساتھ ہی یہ بھی یقین دہانی کرائی کہ بورڈ کے مسائل اور مشکلات مرکزی وزیر دفاع کے ساتھ بھی اُٹھائیں گے۔انہوں نے بورڈ حکام پر زور دیا کہ لوگوں کو ہر سطح پر راحت پہنچائیں۔